Wednesday , December 12 2018

رائے دہی کو لازمی قرار دینے پر جے ڈی یو کی حکومت گجرات پر تنقید

نئی دہلی۔/13نومبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) جنتا دل ( یو ) نے آج حکومت گجرات کے اس فیصلہ کی شدید مذمت کی ہے جہاں مجالس مقامی انتخابات میں رائے دہی کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔ پارٹی نے اس فیصلہ کو غیر جمہوری اور عوام کی آزادی سلب کرنے سے تعبیر کیا۔ صدر جے ڈی ( یو ) شرد یادو نے کہاکہ پارلیمنٹ کو اس بات کا سخت نوٹ لینا چاہیئے اور اس تجویز کو قطعیت دینے

نئی دہلی۔/13نومبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) جنتا دل ( یو ) نے آج حکومت گجرات کے اس فیصلہ کی شدید مذمت کی ہے جہاں مجالس مقامی انتخابات میں رائے دہی کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔ پارٹی نے اس فیصلہ کو غیر جمہوری اور عوام کی آزادی سلب کرنے سے تعبیر کیا۔ صدر جے ڈی ( یو ) شرد یادو نے کہاکہ پارلیمنٹ کو اس بات کا سخت نوٹ لینا چاہیئے اور اس تجویز کو قطعیت دینے سے گریز کرنا چاہیئے۔ یہی نہیں بلکہ جمہوریت کے ساتھ ایسے تجربات کو ہمیشہ کیلئے روکنا چاہیئے۔ حکومت گجرات کے تئیں اپنی عدم تائید کا اظہارکرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں اس نوعیت کے قانون پر عمل آوری نہیں ہوسکتی جس کی میں سخت مخالفت کرتا ہوں۔ یاد رہے کہ ریاست گجرات نے ایک بل پیش کیا ہے جسے گورنر کی بھی تائید حاصل ہے۔ اس کے تحت مجالس مقامی انتخابات میں رائے دہی کو لازمی قرار دیا جائے گا اور اگر کوئی بھی رائے دہندہ حق رائے دہی سے استفادہ نہیں کرتا تو وہ مستوجب سزا یا جرمانہ ہوگا حالانکہ سزا یا جرمانہ کی نوعیت کی بل میں کوئی صراحت نہیں کی گئی ہے۔ شرد یادو نے حکومت گجرات پر الزام عائد کیا کہ ریاست کے اہم اور سلگتے ہوئے مسائل سے عوام کی توجہ ہٹائی جارہی ہے۔ غربت اور بے روزگاری اہم ترین مسائل ہیں جن سے چشم پوشی کرتے ہوئے رائے دہی کو لازمی قرار دینے کی کوشش محض دیوانے کا خواب ہے۔

TOPPOPULARRECENT