Tuesday , December 11 2018

راجستھان اسمبلی کیلئے آج پولنگ،199 حلقے 2ہزار امیدوار

جئے پور 6 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) راجستھان اسمبلی کے لئے سخت انتخابی مہم اور سینکڑوں الیکشن ریالیوں اور روڈ شوز کے گزشتہ روز اختتام کے بعد جمعہ کو 7 ڈسمبر کو رائے دہی ہوگی۔ ملک میں مجموعی طور پر 5 اسمبلیوں کے لئے انتخابات کے تحت 3 جگہ چھتیس گڑھ، مدھیہ پردیش اور میزورم میں پولنگ ہوچکی ہے۔ جمعہ کو راجستھان کے ساتھ تلنگانہ اسمبلی کے لئے بھی ووٹ ڈالے جائیں گے۔ راجستھان میں 200 رکنی اسمبلی ہے جس کے منجملہ 199 حلقوں کے لئے 2,274 امیدوار انتخابی قسمت آزمارہے ہیں۔ آلوار کے رام گڑھ حلقہ میں الیکشن ملتوی کردیا گیا کیوں کہ وہاں بہوجن سماج پارٹی کے امیدوار کا انتقال ہوگیا۔ راجستھان کے چیف الیکٹورل آفیسر آنند کمار نے کہاکہ انتخابی مہم کا چہارشنبہ کو شام 5 بجے اختتام ہوا۔ اِس ریاست میں پولنگ 7 ڈسمبر کو صبح 8 بجے تا شام 5 بجے 199 حلقوں کے لئے ہوگی۔ اُنھوں نے کہاکہ آزادانہ اور منصفانہ چناؤ کے لئے وسیع تر سکیورٹی انتظامات کئے گئے ہیں۔

راجستھان میں 4.7 کروڑ رجسٹرڈ ووٹرس ہیں۔ بی جے پی حکمرانی والی ریاست میں انتخابی مہم ابتداء میں کسانوں کے مسائل اور کرپشن پر مرکوز رہی۔ تاہم ہندوتوا سے متعلق مسائل بھی وزیراعظم نریندر مودی نے اُٹھائے اور صدر کانگریس راہول گاندھی نے بھارت ماتا کی جئے جیسے نعروں پر اختلاف کیا۔ وزیراعظم مودی، چیف منسٹر یوپی یوگی آدتیہ ناتھ، مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ اور کئی دیگر مرکزی وزراء نے ریاست میں مہم چلائی جہاں بی جے پی اقتدار کو برقرار رکھنے کیلئے جدوجہد کررہی ہے۔ چیف منسٹر وسندھرا راجے نے بھی ریاست بھر میں انتخابی مہم چلائی اور دن بھر میں کم از کم 5 جلسوں سے خطاب کیا۔ کانگریس کی طرف سے راہول گاندھی، پارٹی کے اسٹیٹ یونٹ سربراہ سچن پائلیٹ اور سابق چیف منسٹر اشوک گہلوٹ نے ریاست میں پارٹی کے لئے مہم چلائی۔ بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی نے بھی ریاست کی انتخابی مہم میں حصہ لیا۔ اصل مقابلہ تقریباً 130 نشستوں کے لئے بی جے پی اور کانگریس امیدواروں کے درمیان ہے۔ تقریباً 50 دیگر نشستوں پر دونوں پارٹیوں کے باغی امیدواروں کا اہم رول رہنے کی توقع ہے۔

TOPPOPULARRECENT