Saturday , December 15 2018

راجستھان میں راجے حکومت نے شراب ، اراضی اور ریت مافیا کی سرپرستی کی : گہلوٹ

ادے پور۔ 24 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے سینئر قائد اشوک گہلوٹ نے آج کرپشن کے مسئلہ پر چیف منسٹر راجستھان وسندھرا راجے کو اپنی شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور دعویٰ کیا کہ ان کی زیرقیادت حکومت نے شراب، اراضی اور ریت مافیا کی سرپرستی کی ہے۔ اے آئی سی سی جنرل سیکریٹری اشوک گہلوٹ جو 7 ڈسمبر کو منعقد ہونے والے راجستھان اسمبلی انتخابات میں جودھپور کی سردار پورہ نشست کیلئے مقابلہ کررہے ہیں۔ پارٹی کے لئے میوار علاقہ میں انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔ گہلوٹ نے یہاں میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ ’’راجستھان میں کوئی حکومت نے کبھی بھی کسی مافیا کی سرپرستی نہیں کی لیکن وسندھرا راجے حکومت نے یہ کیا ہے۔ اراضی، شراب اور ریت مافیا، ان کی حکومت میں عہدیداروں کے ساتھ سازباز میں پروان چڑھا ہے اور میرا یہ الزام ہے کہ رقم ٹاپ سطح تک پہنچی ہے۔ راجستھان کے سابق چیف منسٹر گہلوٹ نے کہا کہ راجے نے پارٹی صدر کے سامنے سر جھکایا لیکن پانچ سال میں کبھی عوام سے ملاقات نہیں کی۔ امیت شاہ کے سامنے سر جھکانے کے بجائے انہیں راجستھان کے عوام کا خیال رکھنا چاہئے تھا جنہوں نے 2013ء کے انتخابات میں انہیں اقتدار پر لایا تھا لیکن انہوں نے عوام سے دغا کی۔ گہلوٹ نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی حکومت نے پانچ سال میں صرف سابق کانگریس حکومت کی جانب سے شروع کی گئی اسکیمات کو کمزور کرنے کا کام کیا ہے اور ریاست میں کئی اہم پراجیکٹس کو روک دیا۔

TOPPOPULARRECENT