Tuesday , October 16 2018
Home / شہر کی خبریں / راجہ سنگھ ‘ گاؤرکھشا کے لئے بی جے پی سے مستعفی

راجہ سنگھ ‘ گاؤرکھشا کے لئے بی جے پی سے مستعفی

گائیوں کو بچانے ہزاروں کارکن متحرک ہوجائیں گے ‘ رکن اسمبلی کا انتباہ
حیدرآباد ۔ /12 اگست (سیاست نیوز) بی جے پی کے متنازعہ رکن اسمبلی ٹی راجہ سنگھ نے پارٹی سے استعفیٰ دیدیا ہے ۔ تلنگانہ کے صدر بی جے پی ڈاکٹر کے لکشمن کو روانہ کئے گئے مکتوب میں راجہ سنگھ نے کہا کہ بقرعید کے موقع پر ہر سال ریاست میں سینکڑوں گایوں کو ذبیحہ کیا جارہا ہے اور حکومت اس کو روکنے میں ناکام ہے ۔ راجہ سنگھ نے اپنے استعفیٰ کے مکتوب میں کہا کہ ہندو دھرم کا تحفظ ان کی اولین ترجیح ہے اور گاؤماتا کی حفاظت کرنا ان کا فرض ہے ۔ مسلسل ایوان اسمبلی اور ذرائع ابلاغ کے ذریعہ گاؤکشی کے خلاف آواز اٹھانے کے باوجود بھی حکومت کی جانب سے کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کئے گئے اور جاریہ سال بقرعید کے موقع پر پرانے شہر میں 3 ہزار سے زائد گائے اور بیل پہونچ چکے ہیں اور انہیں غیرقانونی طور پر کاٹا جائے گا ۔ گاؤ ماتا کے تحفظ کیلئے وہ کسی بھی حد تک گزرسکتے ہیں اور ان کے کسی بھی اقدام سے پارٹی کی سیکھ متاثر نہ ہو اس لئے وہ پارٹی کے عہدہ سے مستعفی ہور ہے ہیں ۔ استعفیٰ سے قبل راجہ سنگھ نے سوماجی گوڑہ پریس کلب میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو گاؤ کشی کو روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات کرنے چاہئیے ورنہ ان کے ہزار کارکن جو پہلے سے سرگرم ہیں حرکت میں آجائیں گے جس سے پرامن ماحول بھی بگڑسکتا ہے ۔ راجہ سنگھ نے کہا کہ سابق میں پولیس نے شہر کے اطراف و اکناف علاقوں میں 78 چیک پوسٹ قائم کئے تھے تاکہ گایوں کی منتقلی کو یقینی بنایا جاسکے ۔ لیکن موجودہ حکومت اس مسئلہ کو سنجیدگی سے نہیں لے رہی ہے اور جس کے نتیجہ میں کئی جانور غیرقانونی طور پر شہر میں لائے جارہے ہیں ۔ راجہ سنگھ نے کہا کہ بقرعید کے موقعہ پر کمشنر پولیس نے قریشی برادری کا ایک اجلاس منعقد کیا تھا لیکن گاؤکشی کو روکنے کیلئے گاؤ رکھشکوں سے تبادلہ خیال بھی نہیں کیا ۔ گوشہ محل کے رکن اسمبلی نے چیف منسٹر پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت گاؤکشی کو روکنے میں ناکام رہی ہے اور متعلقہ عہدیدار رشوت کھاکر بڑے جانوروں کو کاٹنے کیلئے فرضی سرٹیفکیٹس بھی جاری کررہے ہیں ۔

راجہ سنگھ نے کہا کہ گاوکشی پر مکمل امتناع کے بغیر ہجومی تشدد کے واقعات پر کنٹرول ناممکن ہے ۔

TOPPOPULARRECENT