Wednesday , December 12 2018

راجہ پکسے پارٹی قیادت سے دستبرداری کیلئے آمادہ

کولمبور ۔ 15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا کے سابق صدر مہندا راجہ پکسے نے سری لنکا فریڈم پارٹی کی باگ ڈور ملک کے نئے صدر میتھریپالا سری سینا کے حوالے کردینے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے۔ یاد رہے کہ حالیہ انتخابات میں راجہ پکسے کی شکست کے بعد پارٹی ارکان نے ان پر سبکدوش ہوجانے دباؤ ڈالنا شروع کردیا تھا۔ سری لنکا فریڈم پارٹی میں سری سینا ب

کولمبور ۔ 15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا کے سابق صدر مہندا راجہ پکسے نے سری لنکا فریڈم پارٹی کی باگ ڈور ملک کے نئے صدر میتھریپالا سری سینا کے حوالے کردینے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے۔ یاد رہے کہ حالیہ انتخابات میں راجہ پکسے کی شکست کے بعد پارٹی ارکان نے ان پر سبکدوش ہوجانے دباؤ ڈالنا شروع کردیا تھا۔ سری لنکا فریڈم پارٹی میں سری سینا بطور جنرل سکریٹری خدمات انجام دیا کرتے تھے لیکن راجہ پکسے نے انہیں انتخابات سے عین قبل پارٹی سے خارج کردیا تھا کیونکہ اس وقت وہ حکمراں اتحاد سے (نومبر میں) علحدہ ہوگئے تھے تاکہ انتخابات میں خود کو ایک چیلنجر کے طور پر پیش کرسکیں۔ 8 جنوری کو منعقدہ انتخابات میں سری سینا نے راجہ پکسے کو شکست دیئے ہوئے ان کے 10 سالہ اقتدار کا خاتمہ کردیا تھا۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی دلچسپ ہیکہ انتخابات میں کامیابی کے بعد سری سینا نے پارٹی قیادت کا دعویٰ کا پیش کردیا تھا حالانکہ راجہ پکسے کے حامیوں نے ابتداء میں سری سینا کے اس مطالبہ کی تائید یہ دھمکی دیتے ہوئے تائید نہیں کی کہ وہ پارٹی میں پھوٹ پیدا کردیں گے۔ دوسری طرف ایس ایل ایف پی ذرائع نے بتایا کہ مہندرا راجہ پکسے نے اپنے کچھ پارٹی ارکان کے مطالبہ کو تسلیم کرتے ہوئے ایس ایل ایف پی کی باگ ڈور سری سینا کو سونپ دینے رضامندی کا اظہار کیا جبکہ ایک اہم تبدیلی میں بھی ہوئی کہ مہندا راجہ پکسے کے بھائی باسل راجہ پکسے ایس ایل ایف پی کے قومی آرگنائزر کے عہدہ سے دستبردار ہوگئے ہیں کیونکہ ان کی جانب سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہیکہ اپنے بھائی کی صدارتی انتخابات میں شکست فاش کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے انہوں نے عہدہ سے دستبرداری اختیار کی۔

TOPPOPULARRECENT