Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / راجیو گاندھی قتل کیس تحقیقات پر مرکز سے سپریم کورٹ کا جواب طلب

راجیو گاندھی قتل کیس تحقیقات پر مرکز سے سپریم کورٹ کا جواب طلب

نئی دہلی17اگست (سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی قتل کیس کے قصورواروں کی درخواست پر مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کر کے بیلٹ بم بنانے کے سازش کے تعلق سے تحقیقات کے بارے میں معلومات فراہم کرنے کی ہدایت کی۔جسٹس رنجن گوگوئی کی صدارت والی بنچ نے مرکزی حکومت سے کہا کہ یہ بتا یا جائے کہ بم بنانے سے متعلق ملٹی ڈسپلینری مانیٹرنگ ایجنسی کی تحقیقات کس مر حلے میں ہے ۔اس قتل میں مجرم ٹھہرائے گئے اے جی پیرارولن نے دعویٰ کیا تھا کہ بم بنانے کی سازش سے متعلق پہلو کی مناسب تحقیقات نہیں کی گئی۔پیرارولن نے کل تحقیقات میں بہت اُلٹ پھیر سے متعلق رپورٹ مہر بند لفافے میں عدالت کو سونپی تھی۔ ان کی جانب سے پیش وکیل گوپال شکرناراین نے بنچ کو بتایا کہ جس بم سے سابق وزیر اعظم کو ہلاک کیا گیا اس کے بنانے کے پیچھے سازش سمیت کئی پہلوؤں پر مناسب طریقے سے جانچ نہیں کی گئی۔معاملے کی اگلی سماعت اگلے ہفتے ہوگی۔ گزشتہ 10اگست کو جسٹس گوگوئی کی صدارت والی بنچ راجیو گاندھی قتل کیس کے قصورواروں کی رہائی کی عرضی پر سماعت کے لیے تیار ہو گئی تھی۔راجیو گاندھی قتل میں مجرمین کی تعداد سات ہے جن کے نام پیرارولن، مرگن، شانتن، رابرٹ ، نلنی، جیہ کمار اور روی چندرن ہیں۔ نلنی کو پھانسی کی سزا دی گئی تھی، لیکن بعد میں اسے عمر قید میں تبدیل کر دیاگیا تھا۔ نلنی کے علاوہ چار دیگر کو بھی پھانسی کی سزا ملی تھی۔ ان سزاوں کو بھی عدالت عظمی نے سماعت میں طویل وقت گزر جانے کی وجہ سے عمر قید میں تبدیل کر دیا تھا۔راجیو گاندھی کا قتل 21 مئی 1991ء کو ایل ٹی ٹی ای کے خودکش دستے نے شری پیرمبدور میں کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT