Monday , June 25 2018
Home / ہندوستان / راجیو گاندھی کے قاتلوں کی اندرون 3 دن رہائی ، حکومت ٹاملناڈو کا فیصلہ

راجیو گاندھی کے قاتلوں کی اندرون 3 دن رہائی ، حکومت ٹاملناڈو کا فیصلہ

چینائی 19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) قید کئے جانے کے 23 سال بعد ٹاملناڈو حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ اندرون تین دن راجیو گاندھی قتل مقدمہ کے 7 مجرموں کو رہا کردیا جائے۔ جبکہ سپریم کورٹ نے تین قاتلوں کی سزائے موت کو سزائے عمر قید میں تبدیل کردیا۔ سنتان، نلنکا شوہر مرگن اور پیراری والان کی سزائے موت کو سپریم کورٹ نے کل سزائے عمر قید میں تبدیل کر

چینائی 19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) قید کئے جانے کے 23 سال بعد ٹاملناڈو حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ اندرون تین دن راجیو گاندھی قتل مقدمہ کے 7 مجرموں کو رہا کردیا جائے۔ جبکہ سپریم کورٹ نے تین قاتلوں کی سزائے موت کو سزائے عمر قید میں تبدیل کردیا۔ سنتان، نلنکا شوہر مرگن اور پیراری والان کی سزائے موت کو سپریم کورٹ نے کل سزائے عمر قید میں تبدیل کردیا۔ نلنی، رابرٹ پایرس، جئے کمار اور روی چندرن رہائی پاجائیں گے۔ چیف منسٹر جیہ للیتا نے راجیو گاندھی کے قاتلوں کی عاجلانہ رہائی کا فیصلہ کیا۔ ریاستی کابینہ کا ہنگامی اجلاس اِس مسئلہ پر آج صبح منعقد کیا گیا تھا جس میں یہ فیصلہ کیا گیا اس اعلان سے مجرموں اور اُن کے ارکان خاندان کے چہروں پر خوشی دوڑ گئی۔ فیصلہ کی سوائے کانگریس کے دیگر تمام اپوزیشن پارٹیوں نے ستائش کی۔ اگر مرکز سے اندرون تین دن کوئی جواب وصول نہ ہو تو ریاستی حکومت تمام سات مجرموں کو قانون فوجداری کی دفعہ 432 کے تحت حاصل اختیارات استعمال کرتے ہوئے قیدیوں کو رہا کردے گی۔

چیف منسٹر کے اِس بیان پر ایوان میں ارکان کو وضاحتیں طلب کرنے کی اجازت نہیں دی گئی جس پر کانگریس کے تین ارکان کو ایوان سے باہر کردیا گیا۔ ریاستی سیاسی پارٹیوں کی اکثریت نے جیہ للیتا کے اِس فیصلہ کی ستائش کی۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب مرکزی وزیر قانون کپل سبل نے کہاکہ مرکزی حکومت سپریم کورٹ کے فیصلہ کی پابند ہے۔ تاہم اُنھوں نے بی جے پی پر تنقید کی کہ اُس نے قتل مقدمہ کے بارے میں اور اِس مسئلہ پر ایک لفظ بھی نہیں کہا۔ جبکہ افضل گرو کو پھانسی دینے کا اُس کی جانب سے مطالبہ کیا گیا تھا اور مرکز پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ وہ دہشت گردوں کے ساتھ نرمی برت رہا ہے۔

انہوں نے جیہ للیتا کے اس اقدام کو سیاسی محرکات پر مبنی قرار دیا۔ چینائی میں ڈی ایم کے سربراہ ایم کروناندھی نے آج اپنی کٹر سیاسی حریف چیف منسٹر جیہ للیتا کی راجیو گاندھی کے 7 قاتلوں کو رہا کرنے کے فیصلہ پر ستائش کی۔ اُنھوں نے اُمید ظاہر کی کہ مرکزی حکومت ریاستی حکومت کے فیصلہ کی تائید کرے گی۔ اُنھوں نے کہاکہ اگر ایسا ہوجائے تو اُنھیں اور زیادہ خوشی ہوگی۔ ایم ڈی ایم کے سربراہ وائیکو نے جیہ للیتا کی کارروائی کو قابل ستائش قرار دیا۔ سی پی آئی (ایم) قائد ڈی راجہ نے کہاکہ ٹاملناڈو حکومت نے عدالتی فیصلہ پر تیز رفتار کارروائی کی ہے جو قابل ستائش ہے۔ بی جے پی ٹاملناڈو کے صدر پون رادھا کرشنن نے کہاکہ یہ اقدام قانونی طریقہ کار کے مطابق ہے اور قابل ستائش ہے۔ ٹاملوں کے حامی قائد ٹی نیڈومارن نے دنیا بھر کے ٹاملوں کی جانب سے جیہ للیتا کا شکریہ ادا کیا۔

TOPPOPULARRECENT