Thursday , November 23 2017
Home / سیاسیات / راجیہ سبھا میں ارکا ن کے ریمارکس

راجیہ سبھا میں ارکا ن کے ریمارکس

نئی دہلی ۔ 16 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ملک میں بڑی کرنسی کا چلن بند کرنے کے فیصلہ پر بحث کے دوران ارکان نے حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کئی ریمارکس کئے، جس سے حقیقت کا اندازہ کیا جاسکتا ہے :
’’فرانس انقلاب کے وقت ملکہ نے کہا تھا کہ اگر آپ کے پاس کھانے کیلئے روٹی نہیں ہے تو کیک کھائیے۔ اسی طرح اب مودی یہ کہہ رہے ہیں کہ نوٹ نہیں ہے تو پلاسٹک (کارڈ) استعمال کیجئے‘‘     سیتارام یچوری
’’مودی خود کو سنیاسی کہتے ہیں جبکہ وہ دن میں 5 مرتبہ کپڑے تبدیل کرتے ہیں ۔ وہ وزیراعظم بھی بن گئے اور انہوں نے دنیا بھر کا سفر بھی کیا ہے‘‘
’’مودی جاپان میں بلٹ ٹرین میں سفر کررہے ہیں اور یہاں معمر مرد و خواتین ، عام آدمی 3 بجے رات سے ضروریات زندگی کیلئے کرنسی حاصل کرنے بینکوں کے باہر قطار میں کھڑے ہیں‘‘                آنند شرما
’’حکومت کا اچانک اقدام چلتی ٹرین سے کودنے کے مترادف ہے‘‘    شردیادو
’’وزیراعظم نریندر مودی کو ایوان میں موجود رہتے ہوئے اس اہم مسئلہ پر ارکان کی بات سماعت کرنی چاہئے لیکن وہ موجود نہیں ہے‘‘                  غلام نبی آزاد
’’دیہاتوں میں عوام نے ٹوتھ پیسٹ اور بالوں کیلئے تیل خریدنا بھی بند کردیا ہے۔ آپ اترپردیش میں اس وقت الیکشن منعقد نہ کریں ورنہ گھریلو خواتین ’’بیلن‘‘سے ماریں گی ۔ پھر آپ کو ہلدی سے پیٹھ پر لگے زخم کا علاج کرنا ہوگا             رام گوپال یادو
’’دیش میں پہلی مرتبہ ایماندار کی توقیر اور بے ایمان کی تذلیل ہوئی‘‘      پیوش گوئل

TOPPOPULARRECENT