Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / راجیہ سبھا کیلئے کمزور طبقات کے قائدین امیدوار

راجیہ سبھا کیلئے کمزور طبقات کے قائدین امیدوار

بی سی طبقات کیساتھ انصاف رسانی، وزراء ٹی سرینواس یادو اور جوگورامنا

حیدرآباد۔ 12مارچ (سیاست نیوز) ریاستی وزراء ٹی سرینواس یادو اور جوگو رامنا نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے راجیہ سبھا کے لیے کمزور طبقات سے تعلق رکھنے والے دو قائدین کو امیدوار بناتے ہوئے بی سی طبقات کے ساتھ انصاف کیا ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ریاستی وزراء نے کہا کہ ملک کو 70 سال پہلے آزادی حاصل ہوئی لیکن پسماندہ طبقات کو تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد حقیقی آزادی ملی ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے پسماندہ طبقات کے ساتھ ہر شعبہ میں انصاف کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ راجیہ سبھا کی تین نشستوں میں دو نشستیں پسماندہ طبقات کو مختص کرنا کسی کارنامہ سے کم نہیں اور بی سی طبقات تا عمر کے سی آر کے احسان مند رہیں گے۔ انہوں نے بی سی قائد اور تلنگانہ تحریک میں اہم رول ادا کرنے والے کونسل کے صدرنشین سوامی گوڑ پر کانگریس کارکنوں کے حملے کی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین اپنی غنڈا گردی تلنگانہ ریاست میں جاری نہیں رکھ سکتے۔ انہوں نے کانگریس قائدین کو انتباہ دیا کہ وہ اپنے رویہ میں تبدیلی لائیں۔ انہوں نے کہا کہ کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی کی جانب سے نشانہ بناکر سوامی گوڑ کی طرف ہیڈفون پھینکنے کا ویڈیو ٹیپ موجود ہے۔ سرینواس یادو نے کانگریس ارکان کی جانب سے غیر پارلیمانی الفاظ کے استعمال کا الزام عائد کیا اور کہا کہ کانگریس کا یہ رویہ عوام میں ناراضگی کا سبب بنے گا اور وہ اسپیکر سے خواہش کرتے ہیں کہ ذمہ دار ارکان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ ریاستی وزیر جوگو رامنا نے کہا کہ اگر کانگریس قائدین پسماندہ طبقات کو نشانہ بنائیں گے تو عوام انہیں معاف نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی غنڈوں اور روڈی عناصر کا دوسرا نام ہے۔ 130 سال سے زائد کی تاریخ رکھنے والی پارٹی کے ارکان کا رویہ افسوسناک ہے۔
جوگو رامنا نے کہا کہ گورنر کے خطبے کے دوران کانگریس ارکان نے ایوان میں غنڈا گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے صدرنشین کونسل کو نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ تحریک کے دوران کانگریس حکومت نے سوامی گوڑ پر مظالم ڈھائے تھے اور اب اپوزیشن میں رہتے ہوئے کانگریس کے ارکان انہیں ہلاک کرنے کی سازش کررہے ہیں۔ انہوں نے کانگریس قائدین سے سوال کیا کہ وہ آخر کس مسئلہ پر ایوان میں احتجاج کررہے تھے۔ کے سی آر حکومت نے کوئی شعبہ ایسا نہیں چھوڑا کہ جسے بنیاد بناکر اپوزیشن حکومت پر تنقید کرسکے۔

TOPPOPULARRECENT