Tuesday , December 18 2018

راشن کے حصول کے لیے اب مذہب ذات پات کی وضاحت پر زور

کارڈ ہولڈرس میں تشویش ، محکمہ سیول سپلائز کے ذریعہ تفصیلات حاصل کرنے کا مطالبہ
حیدرآباد ۔ 19 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : سٹی سیول سپلائز عہدیداران راشن کارڈ ہولڈرس کی تفصیلات جیسے مذہب ، ذات اور بینک کھاتے وغیرہ حاصل کرنے کے لیے ڈیلرس پر دباؤ بنا رہے ہیں جس کی وجہ سے ڈیلرس کارڈ ہولڈرس پر واضح کررہے ہیں کہ یہ تمام تفصیلات دینے پر ہی راشن دیا جائے گا ورنہ نہیں ۔ آخر یہ تمام تفصیلات کیوں حاصل کی جارہی ہیں ۔ اس سوال کا جواب دینے والا کوئی بھی نہیں ہے جس کی وجہ سے کارڈ ہولڈرس میں سخت تشویش پائی جارہی ہے ۔ ہر ماہ کی طرح ماہ نومبر میں بھی ڈیلرس راشن تقسیم کے لیے تیار کررہے تھے اسی دوران ڈیلرس کو زبانی احکامات سٹی سیول سپلائز عہدیداران کی جانب سے موصول ہوئے کہ یہ تمام تفصیلات حاصل کی جائیں اور ان تمام تفصیلات کی فراہمی کے لیے ایک فارم حوالہ کیا جارہا ہے اور اس فارم میں راشن شاپ کا نمبر ، راشن کارڈ نمبر ، خاندان کے سربراہ باپ ، بیوی کے نام ، مذہب ، درجہ بندی ، موبائل نمبر ، بینک کھاتے کی تفصیلات ، گیاس کنکشن ہے یا نہیں ؟ اگر ہو تو گیاس ایجنسی کا نام ، کنکشن ڈبل ہے یا سنگل ، اور بینک پاس بک کے علاوہ سربراہ خاندان کے آدھار کارڈ کا زیراکس دینا ہوگا ۔ جب کہ کارڈ ہولڈرس تفصیلات فراہم کرنے سے انکار کررہے ہیں ۔ یہاں تک کہ بعض کارڈ ہولڈرس نے ڈیلرس سے بحث کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے مذہب ، ذات پات سے کیا مطلب ؟ یہ تمام تفصیلات راشن کارڈس منسوخ کرنے کے لیے ہی حاصل کی جارہی ہیں ۔ جب کہ راشن ڈیلرس کا کہنا ہے کہ ہم کارڈ ہولڈرس کے ساتھ روزانہ بحث و تکرار سے تنگ آچکے ہیں ۔ لہذا عہدیداران کو چاہئے کہ یہ احکامات تحریری طور پر فراہم کئے جائیں تاکہ ہم کارڈ ہولڈرس کو احکامات بتاکر ان کی تفصیلات حاصل کرسکیں ۔ مگر عہدیداران اس جانب توجہ بھی مبذول نہیں کررہے ہیں ۔ جس کی وجہ سے ڈیلرس کا کہنا ہے کہ تفصیلات حاصل کرنا ہمارے بس کی بات نہیں ہے لہذا ہم تفصیلات حاصل نہیں کریں گے اور بعض ڈیلرس نے اس معاملہ میں درپیش مشکلات سے راشننگ آفیسر کو واقف کرنے پر انہوں نے کہا کہ صرف مذہب اور ذات کی تفصیلات حاصل کی جائیں مگر بنیادی سطح کے افسران کا کہنا ہے کہ ڈیلرس تمام تفصیلات حاصل کریں بصورت دیگر ڈیلرس کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔ اس مناسبت سے سٹی سیول سپلائی عہدیداران سے وضاحت طلب کرنے پر ایک افسر نے بتایا کہ ان تمام تفصیلات کو حاصل کرنے کا حکم دیا گیا ہے مگر ہمیں بھی پتہ نہیں کہ یہ کیوں حاصل کی جارہی ہیں اور یہ درست ہے کہ کئی ڈیلرس عوامی مخالفت ہونے سے متعلق ہمیں آگاہ کیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT