Wednesday , July 18 2018
Home / Top Stories / رافالے معاملت اور جئے شاہ مسئلہ پر مودی سچائی چھپانے کوشاں

رافالے معاملت اور جئے شاہ مسئلہ پر مودی سچائی چھپانے کوشاں

اہم امور پر جوابدہی سے بچنے پارلیمنٹ سشن کی طلبی میں تاخیر ۔ گجرات میں کانگریس نائب صدر راہول گاندھی کا انتخابی ریلی سے خطاب

داہے گام ( گجرات ) 25 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے آج گجرات میں وزیر اعظم نریندر مودی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور الزام عائد کیا کہ مودی نہیںچاہتے کہ اپنی آبائی ریاست میں اسمبلی انتخابات سے قبل کروڑہا روپئے کی رافالے معاملت اور جئے شاہ کے مسئلہ میںسچائی سامنے آئے ۔ راہول گاندھی نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ این ڈی اے حکومت نہیں چاہتی کہ گجرات انتخابات سے قبل رافالے معاملت اور جئے شاہ کے مسئلہ پر پارلیمنٹ میں تبادلہ خیال ہو اسی لئے اس نے پارلیمنٹ سرمائی اجلاس کو موخر کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ رافالے معاملت پر وزیر اعظم سے تین سوال کر رہے ہیں۔ ایک تو یہ کہ آیا پہلے اور دوسرے معاہدے کے مطابق طیاروں کی قیمتوں میں کوئی فرق ہے ‘ دوسرا یہ کہ آیا دوسرے معاہدہ کے مطابق ہندوستان زیادہ رقم ادا کر رہا ہے اور آیا جس صنعتکار کو یہ کنٹراکٹ دیا گیا ہے آیا اس نے کبھی طیارے تیار کئے ہیں۔ ایک صنعتکار کی کمپنی نے فرانسیسی فرم کے ساتھ جوائنٹ وینچر شروع کیا ہے اور اسے ان طیاروں کا کنٹراکٹ دیا گیا ہے ۔ کانگریس نائب صدر گاندھی نگر میں ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کر رہے تھے ۔ انہوں نے یہ بھی جاننا چاہا کہ رافالے طیاروں کی خریدی کیلئے گذشتہ سال فرانس کے ساتھ معاہدہ کرتے ہوئے آیا مروجہ طریقہ کار کو اختیار کیا گیا یا نہیں ؟ ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو یہ جواب دینا چاہئے کہ آیا اس معاملت کے وقت اس وقت کے وزیر دفاع گوا میں کیوں تھے اور کیا اس معاملت کیلئے سکیوریٹی سے متعلق کابینی کمیٹی کی منظوری حاصل کی گئی تھی ؟ ۔ راہول گاندھی نے المام عائد کیا کہ نریندر مودی ان سوالات کے جواب نہیں دے رہے ہیں کیونکہ وہ چاہتے ہیں کہ رافالے اور جئے شاہ کے معاملتوں پر سچائی گجرات انتخابات سے قبل عوام کے سامنے نہ آئے ۔ انہوں نے کہا کہ رافالے معاملت انڈین ائرفورس سے متعلق مسئلہ ہے ‘ یہ قومی سلامتی ‘ شہیدوں سے تعلق رکھنے والا مسئلہ ہے اور مودی کو ملک اور گجرات کے عوام کے سامنے اس کا جواب دینا چاہئے ۔ کانگریس نائب صدر نے کہا کہ میڈیا نمائندے ان سے کئی سوال کرتے ہیں لیکن یہ لوگ رافالے معاملت اور جئے شاہ کے مسئلہ پر وزیر اعظم سے سوال نہیں کرتے ۔ انہوں نے کہا کہ نریندر مودی اب گجرات کے کئی دورے کرینگے ۔ رپورٹرس مجھے سے کئی سوال کرتے ہیں مودی سے سوالات کیوں نہیں کئے جاتے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو چاہئے کہ وہ مودی سے رافالے اور جئے شاہ کے مسئلہ پر سوال کریں جب وہ گجرات آئیں ۔ وزیر اعظم آئندہ ہفتے گجرات میں بی جے پی امیدواروں کی تائید میں کئی انتخابی ریلیوں سے خطاب کرنے والے ہیں۔ 182 رکنی گجرات اسمبلی کیلئے 9 اور 14 ڈسمبر کو دو مراحل میں رائے دہی ہونے والی ہے ووٹوں کی گنتی 18 ڈسمبر کو ہونے والی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کا ہر سال نومبر میں انعقاد عمل میں آتا ہے اور لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں کئی اہم امور پر تبادلہ خیال ہوتا ہے ۔ لیکن دو وجوہات کی بنا پر پارلیمنٹ سشن کو گجرات انتخابات کے بعد طلب کیا جا رہا ہے ۔ پہلی وجہ تو یہ ہے کہ بی جے پی صدر امیت شاہ کے فرزند نے تین ماہ میں 50 ہزار روپئے کو 80 کروڑ میں تبدیل کردیا اور دوسری اور اصل وجہ رافالے معاملت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ خود نریندر مودی نے فرانس کا دورہ کرتے ہوئے رافالے معاملت کے کنٹراکٹ میں تبدیلیاں کروائی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT