Friday , February 23 2018
Home / Top Stories / رافیل سودے پر حکومت کی مذمت پر جیٹلی برہم

رافیل سودے پر حکومت کی مذمت پر جیٹلی برہم

پرنب سے سبق سیکھنے راہول کو مشورہ، سیاسی بدعنوانی : کانگریس
نئی دہلی ۔ 8 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیرفینانس ارون جیٹلی نے آج کانگریس پر الزام عائد کیا کہ وہ رافیل سودے کی تفصیلات کے انکشاف کا مطالبہ کرتے ہوئے قومی سلامتی سے کھلواڑ کررہی ہے۔ جیٹلی نے لوک سبھا میں کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے حکومت کے فیصلہ کا دفاع کیا جس میں حکومت نے رافیل سودے کی تفصیلات کے انکشاف سے قومی سلامتی کی وجہ بتاتے ہوئے انکار کیا ہے۔ انہوں نے صدر کانگریس راہول گاندھی کو مشورہ دیا کہ وہ سابق وزیردفاع پرنب مکرجی سے قومی سلامتی کے بارے میں سبق سیکھیں۔ کانگریس اور بی جے پی ارکان کے درمیان اس سلسلہ میں زبانی تکرار ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی برسراقتدار ہے اور اس پر کرپشن کے الزامات عائد کئے جارہے ہیں۔ نئے قانون کے تحت این ڈی اے کے خلاف بھی کرپشن کے الزامات ہیں۔ اس لئے وہ چاہتے ہیں کہ رافیل سودے کی قیمت کا انکشاف نہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اپنے مطالبہ پر اٹل رہتے ہوئے قومی سلامتی کی قیمت پر سمجھوتہ کررہی ہے۔ جب یو پی اے برسراقتدار تھی تو اس وقت کے وزرائے دفاع پرنب مکرجی اور اے کے انٹونی نے 15 مرتبہ پارلیمنٹ سے کہا تھاکہ ایسی تفصیلات کا انکشاف قومی مفاد میں نہیں ہے۔ کانگریس کو خود اپنے وزرائے دفاع سے سبق سیکھنا چاہئے۔ راہول گاندھی بھول گئے ہیں کہ رافیل لڑاکا جیٹ طیاروں کی خریداری کا معاہدہ 2016ء میں طئے پایا تھا جبکہ صدر کانگریس راہول گاندھی نے سودے کی تفصیلات کے افشاء کا مطالبہ اب کیا ہے۔ راہول گاندھی نے مودی کی پارلیمنٹ میں تقریروں پر تنقید جاری رکھتے ہوئے پارلیمنٹ کے باہر ایک کانفرنس سے خطاب کے دوران کہا کہ یہ واضح ہوگیا ہیکہ وزیراعظم کو بنیادی سوالات کا جواب دینے سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔

مرکزی وزیردفاع نرملا سیتارامن نے پہلے اعلان کیا تھا کہ وہ قوم کو رافیل طیاروں قیمت سے واقف کروائے گی لیکن وہی اب کہہ رہی ہیکہ وہ ایسا نہیں کرسکتیں کیونکہ یہ ایک سرکاری راز ہے۔ بعدازاں اپنے ٹوئیٹر پر راہول گاندھی نے سوال کیاکہ کیا انہوں نے اپنا موقف تبدیل کردیا ہے یا پھر وزیراعظم کا تحفظ کررہی ہیں یا اپنے کسی دوست کا۔ راہول گاندھی نے کہا کہ انہوں نے مودی سے تین سوالات پوچھے تھے لیکن ایک کا بھی جواب نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اس کا مطلب صرف یہی ہوسکتا ہیکہ رافیل سودے میں کچھ نہ کچھ گڑبڑ ہے۔ لوک سبھا میں مرکزی وزیرفینانس جیٹلی نے کہا کہ صیانتی معاہدہ اور دفاعی سودے انہیں ورثے میں ملے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آپ نے اپنے دوراقتدار میں سودے کی تفصیلات کا انکشاف نہیں کیا تھا۔ اب اس انکشاف کیلئے کیوں زور دے رہے ہیں۔ کانگریس قائد ششی تھرور نے جیٹلی سے کہا کہ ان کی پارٹی قومی سلامتی کی قیمت پر سمجھوتہ کی تفصیلات دریافت نہیں کررہی ہے۔ صرف شفافیت کا مطالبہ کررہی ہے۔ کانگریس کے ترجمان اعلیٰ آنند شرما نے الزام عائد کیا کہ رافیل سودے میں سیاسی کرپشن ہوا ہے۔ انہوں نے راست وزیراعظم پر سیاسی کرپشن کا الزام عائد کیا اور کہا کہ وہ نہیں تو ان کے قریبی ساتھیوں کو اس سے فائدہ حاصل رہا ہے۔ وزیراعظم دراصل سرمایہ داریت کو فروغ دے رہے ہیں۔ راہول گاندھی نے اپنے ٹوئیٹر پر تحریر کیا تھا کہ وزیردفاع نے اپنا موقف کیوں تبدیل کردیا اور رافیل طیاروں کی 2017ء میں کیا قیمت تھی اور فبروری 2018ء میں یہ طیارے کس قیمت پر خریدے جارہے ہیں اس کاانکشاف کرنے سے کیوں انکار کررہی ہیں۔ جو بات قبل ازیں سرکاری رآم نہیں تھی وہ اب سرکاری راز کیسے بن گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزیردفاع کا موقف تبدیل ہونے سے یہ ظاہر ہوتا ہیکہ وہ یا تو وزیراعظم کا دفاع کررہی ہیں یا ان کے کسی قریبی بااعتماد ساتھی کا لیکن قومی سلامتی کی قیمت پر اس قسم کے سمجھوتے اور قومی سلامتی کے کھلواڑ کی ان کی پارٹی اجازت نہیں دے گی۔

TOPPOPULARRECENT