رام جنم بھومی تنازعہ کی عاجلانہ یکسوئی پر زور

وشوا ہندو پریشد کی عنقریب وزیراعظم نریندر مودی سے نمائندگی

وشوا ہندو پریشد کی عنقریب وزیراعظم نریندر مودی سے نمائندگی
لکھنؤ ۔ 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کیلئے عوامی تائید حاصل کرنے کے مقصد سے ’’رام مہااتسو‘‘ کے انعقاد کے بعد وشوا ہندو پریشد کے سادھوؤں نے وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کا منصوبہ بنایا ہے تاکہ رام جنم بھومی تنازعہ کی عاجلانہ یکسوئی پر زور دیا جاسکے۔ وی ایچ پی ترجمان شرد شرما نے بتایا کہ کیندریا مارگا درشک منڈل کا دو روزہ اجلاس 25 مئی سے ہردوار میں منعقد ہوگا۔ اس موقع پر وزیراعظم سے ملاقات کی تاریخ کا فیصلہ کیا جائے گا۔ اس اجلاس میں سادھو سنتوں کے علاوہ وی ایچ پی کے سرکردہ قائدین بشمول اشوک سنگھل اور پروین توگاڈیہ شریک ہوں گے۔ وزیراعظم سے ملاقات کے دوران انہیں ایک یادداشت پیش کی جائے گی جس میں اس مسئلہ کو حل کرنے کے تعلق سے تجاویز ہوں گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم طویل عرصہ سے یہ مطالبہ کررہے ہیں کہ رام جنم بھومی مسئلہ کو حل کیا جائے۔ صدرنشین رام جنم بھومی نیاس مہنت نرتیا گوپی داس یہ کہتے آ رہے ہیںکہ سپریم کورٹ کی خصوصی بنچ تشکیل دی جانی چاہئے۔ اس کا مقصد یہ ہیکہ وزیراعظم اس سمت پہل کریں۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ کو جلد از جلد حل کرنے پر زور دیا جائے گا۔ سادھوؤں کے ایک وفد نے گذشتہ سال صدرجمہوریہ پرنب مکرجی سے ملاقات کی تھی اور شنکردیال شرما کی ہدایات پر عمل آوری یقینی بنانے کا مطالبہ کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT