Friday , September 21 2018
Home / Top Stories / راہول نے کانگریس کی صدارت سنبھال لی ‘ مودی پر نفرت کی سیاست کا الزام

راہول نے کانگریس کی صدارت سنبھال لی ‘ مودی پر نفرت کی سیاست کا الزام

وہ توڑتے ہیں ہم جوڑتے ہیں۔ وہ آگ لگاتے ہیں اور ہم بجھاتے ہیں۔ پارٹی خاندان کی طرح ۔ ذمہ داری سنبھالنے کے بعد خطاب

نئی دہلی 16 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) راہول گاندھی نے آج کانگریس پارٹی کے صدر کی حیثیت سے ذمہ داری سنبھال لی ۔ اس موقع پر 132 سالہ قدیم پارٹی کے اعلی قائدین اور ان کے افراد خاندان بھی موجود تھے ۔ کانگریس کی مرکزی الیکشن اتھاریٹی نے انہیں کانگریس صدر کی حیثیت سے انتخاب کا سرٹیفیکٹ حوالے کیا ۔ اس سلسلہ میں کل ہند کانگریس کمیٹی کے ہیڈ کوارٹرس کے لان میں ایک زبردست تقریب منعقد ہوئی تھی ۔ 47 سالہ راہول گاندھی کو ان کی والدہ اور پیشرو صدر سونیا گاندھی ‘ ہمشیرہ پرینکا گاندھی واڈرا اور ان کے شوہر رابرٹ واڈرا کے علاوہ سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ اور دوسرے سینئر قائدین کی موجودگی میں کانگریس صدارت کا سرٹیفیکٹ حوالے کیا گیا ۔ راہول گاندھی کو سرٹیفیکٹ حوالے کرتے ہوئے مرکزی الیکشن اتھاریٹی کے صدر نشین ایم رامچندرن نے اسے ایک تاریخی لمحہ قرار دیا ۔ راہول گاندھی کے صدارت سنبھالنے کی تقریب کے موقع پر کل ہند کانگریس ہیڈ کوارٹرس کے باہر گہما گہمی کی صورتحال تھی کیونکہ کانگریس کے کارکن کثیر تعداد میں وہاں جمع ہوگئے تھے اور ان کی دھکم پیل سے سینئر قائدین کیلئے بھی پارٹی ہیڈ کوارٹر میں داخل ہونا مشکل ہوگیا تھا ۔ راہول گاندھی نے اپنی والدہ سونیا گاندھی سے یہ ذمہ داری حاصل کی ہے ۔ سونیا گاندھی گذشتہ 19 سال سے پارٹی کی صدر تھیں۔ اس دوران پارٹی صدر کی حیثیت سے ذمہ داری سنبھالنے کے فوری بعد راہول گاندھی نے بی جے پی پر شدید حملہ کیا ہے اور الزام عائد کیا کہ پارٹی نفرت پھیلانے کا کام کر رہی ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ وزیر اعظم نریندر مودی ہندوستان کو پتھر کے دور میں لیجا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اپنے خود کیلئے جدوجہد کر رہی ہے جبکہ کانگریس پارٹی ہندوستان کے ہر شہری کیلئے جدوجہد کر رہی ہے ۔ کانگریس صدر نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ پارٹی ملک میں تمام طبقات سے تعلق رکھنے والے افراد سے تبادلہ خیال کا ذریعہ بنے ۔ تمام مذاہب ‘ تمام نسلوں اور تمام عمروں و جنس سے تعلق رکھنے والے افراد سے بات چیت کی جانی چاہئے اور ہماری بات چیت محبت اور اخوت کے ساتھ آگے بڑھے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں ایسی سیاست کی جا رہی ہے جس کے ذریعہ عوام کو اوپر لانے کی بجائے انہیں کچلنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نفرت اور فرقہ پرستی کو فروغ دے رہے ہے ۔ وہ لوگوں کو توڑتی ہے اور ہم جوڑتے ہیں۔ وہ لوگ آگ لگاتے ہیں اور ہم اسے بجھاتے ہیں۔ راہول گاندھی نے کہا کہ کانگریس پارٹی نے ہندوستان کو 21 ویں صدی میں پہونچایا ہے جبکہ وزیر اعظم آج ہمیں ایک بار پھر پتھر کے دور میں لیجا رہے ہیں جہاں لوگوں کو ان کی رنگ و نسل کی وجہ سے قتل کیا جاتا تھا ۔ ان کے عقائد کی وجہ سے زد و کوب کیا جاتا تھا اور ان کی غذائی عادتوں کی وجہ سے انہیں قتل کیا جاتا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ آج دنیا میں ہونے والا بلا وجہ کا تشدد ہمیں شرمندہ کرتا ہے نوجوانوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کہا جاتا ہے کہ کانگریس قدیم پارٹی ہے ۔ ہم اس کو قدیم اور نوجوان پارٹی بنائیں گے ۔ ہم نفرت کا مقابلہ محبت سے کرینگے ۔ راہول گاندھی نے کہا کہ کانگریس ان کیلئے ایک خاندان کی طرح ہے ۔

TOPPOPULARRECENT