Sunday , June 24 2018
Home / Top Stories / راہول کا وارانسی میں متاثر کن روڈ شو ، مودی کی امیٹھی مہم کا انتقام

راہول کا وارانسی میں متاثر کن روڈ شو ، مودی کی امیٹھی مہم کا انتقام

وارانسی ؍ چنداؤلی۔ 10 ۔ مئی : ( سیاست ڈاٹ کام ) : کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے حلقہ لوک سبھا وارانسی میں انتخابی مہم کے آخری دن آج کئی مقامات پر متاثر کن روڈ شوز میں حصہ لیتے ہوئے اس حلقہ سے مقابلہ کرنے والے بی جے پی امیدوار نریندر مودی کو ان ہی کے انداز میں زبردست جواب دیتے ہوئے بدلہ لے لیا ۔ واضح رہے کہ مودی 9 مرحلوں پر مشتمل زائد

وارانسی ؍ چنداؤلی۔ 10 ۔ مئی : ( سیاست ڈاٹ کام ) : کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے حلقہ لوک سبھا وارانسی میں انتخابی مہم کے آخری دن آج کئی مقامات پر متاثر کن روڈ شوز میں حصہ لیتے ہوئے اس حلقہ سے مقابلہ کرنے والے بی جے پی امیدوار نریندر مودی کو ان ہی کے انداز میں زبردست جواب دیتے ہوئے بدلہ لے لیا ۔ واضح رہے کہ مودی 9 مرحلوں پر مشتمل زائد از دو ماہ طویل انتخابی مہم کے دوران راہول کو سخت تنقیدوں کا نشانہ بنا رہے تھے۔ راہول نے مسلم اکثریتی علاقہ گول گڈہ سے اپنے روڈ شو کا آغاز کیا ۔ اس موقع پر وہ اپنے حق میں نعرے لگانے والے عوام کے پرتپاک خیرمقدم کا وارانسی میں مودی کے خلاف نبردآزما کانگریس امیدوار اجئے رائے کے ساتھ کھلی جیپ سے جواب دے رہے تھے۔

روڈ شو کے 12 کیلو میٹر طویل سفر کو چار گھنٹوں میں مکمل کیا گیا ۔ راہول کی جیپ کے پیچھے کانگریس قائدین، کارکنوں اور چاہنے والوں کی کاروں اور موٹر سیکلوں کا بڑا قافلہ تھا۔ وارانسی میں انتخابی مہم کے آخری دن راہول کا پہلا روڈ شو دراصل 5 مئی کو اُن (راہول) کے حلقہ انتخاب امیٹھی میں مہم کے آخری روز بی جے پی امیدوار سمرتی ایرانی کی تائید میں منعقدہ جلسہ عام سے مودی کے خطاب کا انتقام کہا جاسکتا ہے۔ وارانسی میں راہول کے روڈ شو نے مودی اور عام آدمی پارٹی امیدوار اروند کجریوال کے روڈ شوز سے کہیں زیادہ طویل راستوں کا احاطہ کیا۔ بی ایچ یو گیٹ پر راہول نے مدن موہن مالویہ کے مجسمہ پر پھول چڑھاتے ہوئے سوشلسٹ قائد کو خراج عقیدت ادا کیا۔ حال ہی میں مودی اور کجریوال نے بھی اس مجسمہ کی گلپوشی کی تھی۔ سینئر کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد نے جو یہاں کیمپ کئے ہوئے ہیں، کہا کہ ’’ہم جیتنے کیلئے (یہ انتخابات) لڑ رہے ہیں۔ ہمیں اپنی کامیابی کا یقین ہے‘‘۔ راہول نے ایسے وقت روڈ شو کا اہتمام کیا جب وارانسی میں ہر طرف انتخابی گہما گہمی جنون کی حد تک آگے بڑھ گئی ہے،

جہاں لوک سبھا کے 9 ویں اور آخری مرحلہ کے تحت 12 مئی کو رائے دہی ہوگی ۔ پولیس ملازمین کی کثیر تعداد اور سکیورٹی پرسونل راہول کے قافلہ کو اپنے حصار میں لے چکے تھے اور قافلہ کی دونوں جانب ٹھہرے عوام کانگریس کے پرچم اور اپنے ہاتھ لہراتے ہوئے راہول کا استقبال کررہے تھے۔ راہول کے روڈ شو کو بینیا باغ سے گزرنے کی اجازت دی گئی جہاں الیکشن کمیشن نے سکیوریٹی وجوہات کی نشاندہی کرتے ہوئے مودی کو جلسہ عام منعقد کرنے کی اجازت نہیں دی تھی، جس پر بی جے پی نے شدید برہمی کا اظہار کیا ہے۔

راہول کے روڈ شو میں مدھو سدن مستری ، اداکارہ و کانگریس امیدوار حلقہ میرٹھ نغمہ ، سی پی جوشی ، راج ببر اور دیگر بھی موجود تھے ۔ وارانسی میں روڈ شو کے دوران راہول نے کہیں بھی خطاب نہیں کیا لیکن بعدازاں پڑوسی حلقہ چنداؤلی میں انھوں نے ریلی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ مودی کو ہندوستان اور اس کے عوام کی طاقت کا اندازہ نہیں اور وہ نفرت کی سیاست پر عمل پیرا ہیں۔ کانگریس لیڈر نے گجرات طرز کی ترقی سے متعلق مودی کے دعوؤں کا مذاق بھی اڑایا اور الزام عائد کیا کہ نریندر مودی چند مٹھی بھر صنعتکاروں کے دوست ہیں جبکہ کانگریس ملک کے 120 کروڑ عوام بالخصوص 70 کروڑ غریبوں کی دوست ہے اور اُن کی ترقی کیلئے کام کررہی ہے۔

استاد بسم اللہ خاں کے ارکان خاندان کی شہنائی
شہرہ آفاق شہنائی نواز استاد بسم اللہ خاں مرحوم کے ارکان خاندان نے قبل ازیں وارانسی راہول گاندھی کے روڈ شو کے موقع پر شہنائی نوازی کی ۔ قبل ازیں بسم اللہ خاں کی فیملی نے 24 اپریل کو نریندر مودی کے پرچہ نامزدگی کے ادخال کے موقع پر تجویز کنندہ بننے کی درخواست قبول نہیں کی تھی۔ تاہم شہنائی نواز فیملی نے وضاحت کی کہ وہ کسی بھی سیاسی جماعت کی حامی نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT