Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / راہول کی صدارت میں کانگریس کو نئی تحریک و توانائی یقینی

راہول کی صدارت میں کانگریس کو نئی تحریک و توانائی یقینی

قیادت کی منتقلی کے باوجود ہندوستانی سیاست میں سونیا گاندھی کا کلیدی کردار برقرار رہیگا: سلمان خورشید
حیدرآباد۔/21ستمبر، ( پی ٹی آئی) کانگریس کے سینئر لیڈر سلمان خورشید نے آج کہا کہ کانگریس کی صدارت پر راہول گاندھی کے فائز ہونے کی صورت میں اس پارٹی میں ایک نئی تحریک و توانائی پیدا ہوگی۔ تاہم صدارتی ذمہ داری کی منتقلی کے باوجود سونیا گاندھی ہندوستانی سیاست میں بدستور کلیدی رول ادا کرتی رہیں گی۔ گاندھی خاندان کے سیاسی وارث کی کانگریس کی صدارت پر تخت نشینی کی قیاس آرائیوں کے درمیان سابق مرکزی وزیر سلمان خورشید نے کہا کہ صدارت کی منتقلی کی اس پارٹی کیلئے نفسیاتی اہمیت رکھتی ہے۔ سلمان خورشید نے جو حیدرآباد کے دورہ پر تھے پی ٹی آئی کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ ’’ یہ ( صدارت کی منتقلی ) کئی اعتبار سے تنظیم کیلئے بھی اہمیت رکھتی ہے۔ یہ اپنی پارٹی کو ایک نئی تحریک و توانائی اور جِلا بخش سکتی ہے۔ اور بروقت جب کبھی کسی بھی ملک میں کسی بھی تنظیم میں قیادت کی تبدیلی ہوئی ہے تو یہ اپنے ساتھ ایک نئی اُمید لاتی ہے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ پارٹی میں یہ عام احساس ہے کہ صدارت کی منتقلی ہونا چاہیئے۔ سلمان خورشید نے مزید کہا کہ ’’ اگر کوئی اس منتقلی کو معمول کی تبدیلی سمجھتے ہیں تو یہ ان کی تنگ نظری ہوگی کیونکہ ہمارے پاس کانگریس کو موجودہ صدر سونیا گاندھی کا غیر معمولی طور پر ایک بڑا نفسیاتی و سیاسی رتبہ ہے جو محض صدارت کی منتقلی سے ختم نہیں ہوجائے گا ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ وہ محسوس کرتے ہیں کہ اس تبدیلی کے باوجود سونیا گاندھی بدستور کلیدی سیاسی کردار ادا کرتی رہیں گی۔ لیکن وہ کس انداز میں یہ ذمہ داری نبھائیں گی اس کا فیصلہ صرف انھیں ہی کرنا ہوگا۔ سلمان خورشید کے مطابق کانگریس میں ہونے والی تبدیلی اس پارٹی میں ایک تازہ توانائی لائے گی اور اس سے ایک نئے اور جواں سال رہنما ( راہول گاندھی ) کو اپنے انداز میں ترجیحات طئے کرنے اور اس کے مطابق کام کرنے کا موقع فراہم ہوگا۔ کانگریس کے نائب صدر کے پاس کئی جدید نظریات ہیں۔ کانگریس کے ایک اور سینئر لیڈر ایم ویرپا موئیلی نے گذشتہ ہفتہ ان اشارہ دیا تھا کہ راہول بہت جلد اور ممکن ہے کہ آئندہ ماہ اپنی نئی ذمہ داری سنبھال لیں گے۔ تاہم سلمان خورشید نے اعتراض کیا کہ اس ضمن میں کافی غیر یقینی ہے کہ راہول آیا کس وقت اپنی پارٹی کی باگ ڈور سنبھالیں گے۔ انہوںنے کہا کہ ’’ میں کوئی پیش قیاسی نہیں کرسکتا لیکن میرے خیال میں زیادہ سے زیادہ افراد کا یہ احساس ہے کہ یہ بہت جلد ہونے والا ہے۔ لیکن کسی ٹھیک وقت کی پیش قیاسی کرنا انتہائی احمقانہ ہوگا کیونکہ اس ( پیش قیاسی ) کیلئے بھی کوئی بنیاد ہونا ضروری ہے۔‘‘

TOPPOPULARRECENT