Wednesday , September 19 2018
Home / سیاسیات / راہول گاندھی پر شخصی حملے کرنے پر شیوسینا کی مودی پر تنقید

راہول گاندھی پر شخصی حملے کرنے پر شیوسینا کی مودی پر تنقید

نئی دہلی ۔ 10مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک غیر متوقع واقعہ میں شیوسینا رکن سنجے راوت نے وزیراعظم نریندر مودی کو آڑے ہاتھوں لیا ۔ مودی نے راہول گاندھی کے وزیراعظم بننے کے بارے میں کہے جانے پر کہ’’ اگر پارٹی فیصلہ کرتی ہے کہ میں 2019ء کے انتخابات میں کانگریس کی کامیابی پر وزیراعظم بنوں تو میں اسے قبول کروں گا ‘‘۔ اس سلسلہ میں مودی نے راہول گاندھی کو کہا تھا کہ وہ سینئر قائدین کو نظرانداز کر کے وزیراعظم بننے کا خواب دیکھ رہے ہیں ۔ اس لئے وہ باز آجائیں ۔ اس بیان پر راوت نے مودی پر شدید اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ ہر پارٹی اپنے موقع پر اس کا فیصلہ کرتی ہے کہ کسے وزیراعظم / وزیراعلیٰ بنایا جائے ۔ اس معاملہ میں دوسروں کو مداخلت نہیں کرنی چاہیئے ۔ راوت نے مودیپر طنزیہ وار کرتے ہوئے کہا کہ جیسے وہ مرلی منوہر جوشی اور ایل کے اڈوانی کو پھلانگ کر وزیراعظم بنے ہیں جبکہ لائین میں وہاں دونوں تھے ‘ تاہم بی جے پی پارٹی نے ان کے حق میں فیصلہ کیا ۔اس لئے کہ جمہوریت میں کسی بھی قائد کو برا بھلا کہنے سے پہلے اپنے بارے میں بھی سوچ لینا چاہیئے ۔ راوت نے مزید ایک مثال کانگریس کی دی کہ سابق وزیراعظم منموہن سنگھ سے زیادہ سینئر و تجربہ کار ’’پرنب دا‘‘ تھے ‘ تاہم پارٹی کے فیصلہ کے مطابق منموہن سنگھ کو وزیراعظم کی حیثیت سے چنا گیا ۔ اہمیت کی بات یہ ہیکہ شیوسینا کی جانب سے راہول گاندھی کی تائید پہلے ہی بی جے پی کے ساتھ موجود چقپلش میں اگر میں تیل ڈالنے کا کام کرے گی جس کا فوری اثر آنے والے 2019ء کے لوک سبھا کے انتخابات میں محسوس ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT