Monday , December 18 2017
Home / Top Stories / راہول گاندھی کو کانگریس صدر بنانا ضروری : منی شنکر ایئر

راہول گاندھی کو کانگریس صدر بنانا ضروری : منی شنکر ایئر

سونیا گاندھی پارٹی اُمور کی نگران کار ہوسکتی ہیں، انتخابی ناکامیوں کے بعد تنظیم جدید پر زور
نئی دہلی۔22 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے سینئر لیڈر منی شنکر ایئر نے پرزور الفاظ میں مطالبہ کیا کہ راہول گاندھی کو پارٹی صدر بنایا جانا چاہئے۔ ایک ایسے وقت جبکہ یوپی انتخابی ہزیمت کے بعد ان کی قائدانہ صلاحیتوں پر بڑے سوال اُٹھ رہے ہیں،انہیں پارٹی کی کامل ذمہ داری دینے کے لئے زور دیا جارہا ہے۔ منی شنکر ایئر نے پارٹی صدر سونیا گاندھی کے لئے پارٹی کا نگران کار بنانے کی وکالت کی اور زور دے کر کہا کہ کانگریس کو ایک مضبوط اتحاد بنانے کی جانب بھی غور کرنے کی ضرورت ہے۔ اترپردیش اور اُتراکھنڈ میں پارٹی کی بدترین ہزیمت کے باعث کانگریس قائدین کی جانب سے بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کے لئے زور دیا جارہا ہے۔  اس دباؤ کے درمیان منی شنکر ایئر نے کہا کہ مجھے توقع ہے کہ کانگریس کی قائم مقام قیادت جو چند ماہ سے کام کررہی ہے تو اب باقاعدہ کام کرنا ہوگا تاکہ وہ پارٹی کو جمہوری طریقوں سے کام کرنے میں آزادی مل سکے۔ 75 سالہ کانگریس لیڈر منی شنکر ایئر نے توقع ظاہر کی کہ راہول گاندھی کو بہت جلد کامل اختیارات دیئے جائیں گے۔ انتخابات میں پارٹی کی مسلسل ناکامیوں کے بعد راہول گاندھی کی قیادت نکتہ چینی کا شکار ہورہی ہے، جبکہ کانگریس کے سینئر قائدین ڈگ وجئے سنگھ نے حال ہی میں کہا کہ راہول گاندھی فیصلہ کن طریقہ سے کام نہیں کررہے ہیں۔ کیرالا یوتھ کانگریس کے نائب صدر سی آر مہیش نے راہول سے استعفیٰ کے لئے زور دیا تھا اور کہا تھا کہ اگر وہ پارٹی کی قیادت اول دستہ لیڈر بن کر نہیں کرنا چاہتے تو انہیں استعفیٰ دینا چاہئے۔ ایم ویرپا موئیلی اور ستیہ ورتا چترویدی جیسے پارٹی کے سینئر قائدین نے بھی پارٹی میں تبدیلیوں ضرورت ظاہر کی ہے

اور کہا کہ پارٹی کو سرجری کی ضرورت ہے۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا کانگریس کو خوداحتسابی کے عمل سے گذرنے میں کیا رکاوٹ حائل ہے جبکہ رپورٹس میں زور دیا گیا ہے کہ پارٹی میں تبدیلیوں کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نہیں چاہتا لہذا میں یہ سوچنا ہوں کہ اب راہول کا وقت آگیا ہے کہ اب وہ نہ کریں جو اب تک کرتے آنے میں ایک کامل اختیارات کے حامل لیڈر بن چاہتا۔ ان کی کارکردگی میں کمی اس لئے ہے کیونکہ وہ پارٹی اُمور کے لئے اختیارات نہیں رکھتے سونیا گاندھی کے رول کے بارے میں انہوں نے کہا تھا کہ جب راہول گاندھی کو پارٹی صدر بنادیا جائے تو سونیا گاندھی سرپرست پارٹی کی حیثیت سے کام کرسکتی ہیں۔ مجھے توقع ہے کہ سونیا گاندھی صحت مند ہوں گی، لہذا وہ پارٹی کی سرپرستی کرتے ہوئے اس پر نظر رکھ سکتی ہیں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا 2019ء کے انتخابات سے قبل کانگریس کو اپنی حکمت عملی تبدیل کرنی ہوگی اور وزارتِ عظمی کے عہدہ پر کسی لیڈر کا نام تجویز نہیں کرنا چاہئے۔ منی شنکر ایر نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ اتحاد سی گروپ میں کسی کو وزارت عظمیٰ 6 امیدوار نامزد کرے گا۔ منی شنکر ایئر نے بی جے پی کو چیلنج کرنے کے لئے 2019ء کے انتخابات میں عظیم اتحاد کی وکالت کی ہے اور زور دیا ہے کہ اب آئندہ دو سال میں بہترین کام انجام دے کر ایک بڑے اتحاد کے ارکان کو یقینی ماڈل پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ منی شنکر ایئر نے اثبات میں جواب دیا اور کہا کہ بلاشبہ عظیم اتحاد کرنا پڑے گا۔ ٹاملناڈو میں کانگریس 10 ویں حلیف پارٹی بنی ہوئی ہے تو بہار میں تیسری حلیف پارٹی ہے اور یوپی میں اس کی دوسری حلیف پارٹی کا رول ادا کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT