Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / رقم نکالنے فریش خاتون کی ایمبولنس میں آمد

رقم نکالنے فریش خاتون کی ایمبولنس میں آمد

ایس بی آئی حسینی علم میں اندوہناک واقعہ ، سینکڑوں افراد نظارہ کے بعد اشکبار
محمد مبشر الدین خرم
حیدرآباد۔15ڈسمبر۔ ملک میں کرنسی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد یہ کہا گیا تھا کہ ملازمین اور معمرین کیلئے بینکوں میں علحدہ قطاریں ہوں گی لیکن کئی مقامات پر ایسا نہیں ہو پایا اور معمرین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ حکومت کے اس فیصلہ سے اب وہ لوگ بھی محفوظ نہیں ہیںجو فریش ہو چکے ہیں اور چلنے پھرنے سے قاصر ہیں۔ اسٹیٹ بینک آف حیدرآباد حسینی علم شاخ میں آج ایک ایسا اندوہناک نظارہ دیکھا گیا جس کے سبب قطار میں کھڑے لوگوں کی آنکھیں نم ہو گئی لیکن وہ کچھ بھی کرنے سے قاصر رہے۔ 75سالہ خاتون اپنے وظیفہ کے کھاتہ سے رقم منہاء کرنے کیلئے ایمبولنس میں پہنچی جنہیں ایک گھنٹہ سے زائد بینک کے باہر ایمبولنس میں پڑے اپنی رقم نکالنے کیلئے انتظار کرنا پڑا۔75 سالہ خاتون محترمہ مجید النساء زوجہ مرزا وحید علی بیگ جو کہ حسن نگر کی رہنے والی ہیں نے اپنے اخراجات کیلئے وظیفہ کی جو رقم منہاء کرنی تھی اس کے لئے اپنی دختر اور نواسے کے ساتھ ایمبولنس میں پہنچی ۔ ان کے نواسے نے بتایا کہ وہ اپنی نانی کی تشخیص کیلئے انہیں دواخانہ لے گئے تھے لیکن علاج و معالجہ کیلئے درکار پیسوں کیلئے انہیں بینک لانا بھی مجبوری ہو گئی جس کے سبب انہیں بینک لایا گیا اور ان کے کھاتہ سے وظیفہ کی رقم نکالی گئی ۔اسٹیٹ بینک آف حیدرآباد حسینی علم شاخ میں آج فی کس 4ہزار روپئے منہاء کرنے کی سہولت فراہم کی گئی تھی لیکن بینک عہدیداروں نے انسانی ہمدردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مذکورہ خاتون کو 10ہزار روپئے کی اجرائی عمل میں لائی۔ ایمبولنس میں خاتون کے رقم منہاء کرنے کیلئے پہنچنے کی اطلاع کے ساتھ ہی قطار میں کھڑے لوگوں میں برہمی کی لہر پیدا ہوگئی اور وہ بینک کے ذمہ داروں کو اس جانب متوجہ کروانے کی کوشش کرتے رہے لیکن کافی دیر بعد عملہ اس جانب متوجہ ہو پایا جس کے سبب رقم کی اجرائی میں تاخیر ہوئی ۔ قطار میں کھڑے لوگوں نے بتایا کہ صرف دو کاؤنٹر کام کرنے کے سبب بینک میں کافی ہجوم دیکھا جا رہا ہے لیکن دیگر شاخوں کی بہ نسبت شہر میں اسٹیٹ بینک آف حیدرآباد حسینی علم شاخ کی جانب سے بینک کے باہر شامیانہ نصب کرتے ہوئے گاہکوں کیلئے دھوپ سے محفوظ رکھنے کا سامان مہیا کیا گیا ہے ۔ شہر کے کئی علاقوں میں بینکو ںکی جانب سے حکومت کی معلنہ رقم کی اجرائی سے یہ کہتے ہوئے انکار کیا جا رہا ہے کہ ناکافی نقدی کے سبب وہ رقومات جاری کرنے سے قاصر ہیں اسی لئے ضرورت کی تکمیل کیلئے کم سے کم رقومات کی اجرائی کو یقینی بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔محترمہ مجید النساء کے نواسے جناب اصغر حسین نے بتایا کہ ان کے نانا مرزا وحید علی بیگ مرحوم محکمہ پولیس سے وظیفہ پر سبکدوش ہوئے جن کا وظیفہ ان کی نانی کو ملا کرتا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ سادھنا ہاسپٹل راجندر نگر کی ایمبولنس کے ذریعہ مریض کو مغلپورہ میں واقع ایک دواخانہ میں تشخیص کیلئے لے جایا گیا اور وہاں سے انہیں بینک لایا گیا جہاں قریب دیڑھ گھنٹہ بعد انہیں 10ہزار روپئے حاصل کرنے میں کامیابی حاصل ہوئی۔بینک قطار میں ایمبولنس میں موجود ضعیف العمرمریضہ کو بینک پہنچ کر رقم منہاء کرنے کیلئے ایک گھنٹے سے زائد وقت درکار ہونا اس بات کا ثبوت ہے کہ حالات بتدریج بہتر نہیں ہو رہے ہیں بلکہ ان میں ابتری پیدا ہونے لگی ہے۔

TOPPOPULARRECENT