Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / رمضان المبارک میں حکومت سے خصوصی انتظامات نظرانداز

رمضان المبارک میں حکومت سے خصوصی انتظامات نظرانداز

برقی شٹ ڈاؤن، آبرسانی اور صاف صفائی میں بروقت انتظامات سے قاصر
حیدرآباد۔/10جون، ( سیاست نیوز) رمضان المبارک میں ہر سال حکومت کی جانب سے خصوصی انتظامات کئے جاتے ہیں لیکن گزشتہ برسوں کے مقابلہ جاریہ سال حکومت بہتر انتظامات کو یقینی بنانے میں ناکام دکھائی دے رہی ہے۔ حکومت نے رمضان المبارک کے آغاز سے قبل انتظامات کے سلسلہ میں جو کچھ دعوے کئے تھے وہ کھوکھلے ثابت ہوئے۔ برقی کی بلاوقفہ سربراہی، مساجد کے اطراف واکناف کے علاقوں میں صحت و صفائی، پانی کی موثر سربراہی اور سڑکوں کی درستگی جیسے اہم مسائل کی یکسوئی میں نظم و نسق بری طرح ناکام دکھائی دے رہا ہے۔ حیرت تو اس بات پر ہے کہ بارہا توجہ دلانے کے باوجود حکومت میں شامل افراد اور عہدیدار تساہل سے کام لے رہے ہیں۔ رمضان المبارک سے قبل سرکاری سطح پر منعقدہ جائزہ اجلاس میں جو فیصلے کئے گئے تھے ان پر عمل آوری کا بھی جائزہ لیا جاسکتا ہے لیکن شہر سے تعلق رکھنے والے کسی بھی وزیر نے اس مسئلہ پر جائزہ اجلاس طلب کرنے کی زحمت نہیں کی۔ حالانکہ یہ وزراء پرانے شہر اور دیگر علاقوں میں دعوت افطار میں شرکت کررہے ہیں جہاں انہیں عوام کی جانب سے برقی، آبرسانی اور صحت و صفائی جیسے مسائل سے واقف کرایا جارہا ہے۔ اب جبکہ رمضان المبارک کا نصف حصہ گذرچکا ہے انتظامات مزید ابتر ہوتے دکھائی دے رہے ہیں۔ گزشتہ تین دن کے دوران بارش کے بعد سے برقی کی سربراہی کا معاملہ درہم برہم ہے اور کوئی بھی اس بات کی ضمانت نہیں دے سکتا کہ برقی کی سربراہی کب اور کیوں منقطع ہوجائیگی۔ عام طور پر محکمہ برقی کی جانب سے افطار، تراویح اور سحر کے موقع پر بلاوقفہ سربراہی کے انتظامات کئے جاتے رہے ہیں لیکن اس مرتبہ میڈیا میں مسلسل شکایات کے باوجود بھی عہدیدار خاموش ہیں، کہیں ایسا تو نہیں کہ ریاست پھر ایک بار برقی پیداوار کے سلسلہ میں بحران کا شکار ہوتی جارہی ہے۔ تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے درمیان تنازعہ کا اثر بھی برقی سربراہی پر پڑنے کی اطلاعات ہیں۔ اہم اوقات میں برقی کی عدم سربراہی سے ایک طرف نمازوں میں دشواری ہورہی ہے تو دوسری طرف روزہ داروں کو گھروں میں روز مرہ کے کاموں کی تکمیل میں مسائل کا سامنا ہے۔ اکثر دیکھا جارہا ہے کہ افطار سے عین قبل پرانے شہر کے کئی علاقوں میں برقی سربراہی منقطع کردی جاتی ہے اور اس سلسلہ میں پہلے سے کوئی اعلان نہیں کیا جاتا۔ عوام جب برقی کے شکایت سل سے ربط قائم کرتے ہیں تو انہیں رٹا رٹایا ایک ہی جواب دیا جاتا ہے کہ تکنیکی خرابی کے سبب سربراہی منقطع ہوئی اور درستگی کا کام جاری ہے۔ ایسی مساجد جہاں جنریٹر کا انتظام نہیں وہاں افطار اور تراویح کے موقع پر دشواریاں ہورہی ہیں۔ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے رمضان المبارک کے دوران کچہرے کی نکاسی اور صحت و صفائی کی خصوصی مہم چلانے کا اعلان کیا تھا لیکن بارش کے ساتھ ہی کچہرے سے اُٹھنے والی بدبو گذرنے والے راہگیروں اور روزہ داروں کیلئے ناقابل برداشت بن چکی ہے۔ بلدیہ کی جانب سے روزانہ کچہرے کی نکاسی اور موریوں کی صفائی کیلئے عصری گاڑیاں متعارف کی جارہی ہیں لیکن افسوس کہ ان گاڑیوں کا گذر پرانے شہر میں کہیں دکھائی نہیں دیتا۔ بارش کے ساتھ ہی موریاں اُبل کر پانی سڑکوں پر بہنے لگتا ہے اور یہ مسئلہ پرانے شہر کے کئی علاقوں میں درپیش ہے۔ تجارتی سرگرمیوں میں بھی برقی کی عدم سربراہی سے مشکلات پیش آرہی ہیں۔ عوام نے شکایت کی کہ ایک دن کے وقفہ سے پانی کی سربراہی کا نظم بھی رمضان المبارک میں پابندی کے ساتھ برقرار نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT