Saturday , November 25 2017
Home / عرب دنیا / روسی طیارہ کو مار گرانے کے کوئی ثبوت نہیں : مصر

روسی طیارہ کو مار گرانے کے کوئی ثبوت نہیں : مصر

قاہرہ ۔ 14 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مصر نے آج ایک وضاحتی بیان دیتے ہوئے کہا کہ روس کے جس مسافر بردار طیارہ کو مار گرایا گیا تھا، اسے دہشت گردانہ کارروائی یا ’’غیرقانونی کارروائی‘‘ سے تعبیر کرنے کے کوئی ثبوت نہیں ملے ہیں۔ اکٹوبر میں روس کے ایک مسافر بردار طیارہ کو مار گرایا تھا جس میں تمام 224 مسافرین ہلاک ہوگئے تھے حالانکہ قبل ازیں طیارہ کو تباہ کرنے کی ذمہ داری آئی ایس آئی نے لی تھی۔ طیارہ حادثہ کی تحقیقات کرنے والی مصر کی ایک کمیٹی نے اپنی ابتدائی رپورٹ میں وضاحت کی کہ کمیٹی کو ایسے کوئی ثبوت فراہم نہیں کئے گئے جن کے تحت یہ باور کیا جاسکے کہ طیارہ کو مار گرانے میں کوئی سازش رچی گئی تھی۔ گذشتہ ماہ روس نے ادعا کیا تھا کہ طیارہ کو بم سے اڑایا گیا تھا اور صدر روس ولادیمیر پوٹن نے اس حادثہ پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انتقامی کارروائی کا انتباہ بھی دیا تھا۔ 31 اکٹوبر کی صبح شرم الشیخ کے بحراحمر ریسارٹ سے سینٹ پیٹرس برگ کے لئے پرواز کرنے والا طیارہ کا اڑان کے صرف 23 منٹ بعد ٹریفک کنٹرول سے رابطہ منقطع ہوگیا تھا۔ مصر کے صحرائے سینائی کی فضاء میں روسی طیارہ کو مار گرایا گیا تھا۔ روس نے الزام عائد کیا تھا کہ یہ کارروائی دہشت گردوں کی ہے۔ بعدازاں ایک اور بیان سامنے آیا تھا جس میں طیارہ کو حادثہ ہونے کا تذکرہ کیا گیا تھا۔ ان متضاد بیانات کی وجہ سے الجھن پیدا ہوگئی تھی کہ یہ طیارہ حادثہ تھا یا اس پر حملہ کیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT