روس اور قطر کیلئے ورلڈکپ کی میزبانی سخت چیالنج

ماسکو ؍ دوحہ 16 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) فیفا ورلڈکپ 2018 اور2022 کی میزبانی روس اور قطر کریگا لیکن میگا ایونٹ کی میزبانی سے قبل دونوں ملکوں کوسخت چیالنجس کا سامنا ہے۔ فیفا دونوں میزبانوں سے برازیل ورلڈ کپ کی طرح کامیاب انعقادکی توقع کررہا ہے۔فیفا کے صدر سیپ بلاٹرنے میزبان روس ورلڈ کپ میں 10 تا 12 میدانوں کی تعداد میں کمی کرنے پر سخت تحفظات

ماسکو ؍ دوحہ 16 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) فیفا ورلڈکپ 2018 اور2022 کی میزبانی روس اور قطر کریگا لیکن میگا ایونٹ کی میزبانی سے قبل دونوں ملکوں کوسخت چیالنجس کا سامنا ہے۔ فیفا دونوں میزبانوں سے برازیل ورلڈ کپ کی طرح کامیاب انعقادکی توقع کررہا ہے۔فیفا کے صدر سیپ بلاٹرنے میزبان روس ورلڈ کپ میں 10 تا 12 میدانوں کی تعداد میں کمی کرنے پر سخت تحفظات کا اظہارکردیا۔ فیفا کے صدر سیپ بلاٹران نے کہاکہ برازیل میں ہنگاموں اور احتجاج کے باوجود ورلڈ کپ کا انعقاد کرنے پر خوشی ہے اورتوقع ہے کہ 2018 اور 2022 ء بھی ورلڈ کپ کیلئے دیئے گئے منصوبے پر عمل کرے گا۔ علاوہ ازیں روس کے میدانوں کی تعداد میں کمی کرنے پرسخت تحفظات ہیں لیکن وہ ستمبر میں روس کا دورہ کرینگے اور 2018 ورلڈ کپ کے منتظمین سے ملاقات میں اس معاملے پر بات چیت کریں گے۔

دوسری جانب روس 2018 ورلڈ کپ کی تیاریوں کے حوالے سے میدانوں کی تعداد میں کمی نہیں کرے گا۔آرگنائزنگ کمیٹی کے ڈائریکٹر جنرل الیکسی سوروکن نے کہاکہ روس میدانوں کی تعداد میں کمی نہیں کرے گا اور طے شدہ منصوبے کے تحت میگا ایونٹ سے قبل میدانوں کی تعمیرات مکمل کرلی جائیں گی۔ دریں اثنا چین نے روس کو 2018 ورلڈ کپ میںتعاون کرنے کی پیش کش کردی۔ کمیونسٹ پارٹی آف چین کے جنرل سکریٹری ژی ینگ پینگ نے روسی صدر ولادیمیر پوٹن سے ملاقات کی اور 2018 میں ہونے والا ورلڈ کپ میں تعاون کرنے کی پیشکش کی۔ انھوں نے کہاکہ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ چین اس میگا ایونٹ میں شرکت کرے گا لیکن ہم روس کی میگا ایونٹ کی تیاریوں میں مدد کیلئے تیار ہیں۔ واضح رہے کہ 2018 ورلڈ کپ کاانعقاد 8 جون تا 8 جولائی تک روس کے 11شہروں میں کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT