Sunday , November 18 2018
Home / دنیا / روس میں افغانستان پر 5فریقی مذاکرات

روس میں افغانستان پر 5فریقی مذاکرات

کابل /ماسکو۔4 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) روسی وزارتِ خارجہ نے ہفتے کو ایک بیان میں کہا ہے کہ روس میں افغان امن مذاکرات 9 نومبر کو ہونگے ،جن میں افغان طالبان کا وفد بھی شریک ہوگا۔روس نے کہا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی ماسکو میں ہونے والے امن مذاکرات میں شرکت کے لیے سینئر افغان سیاست دانوں پر مشتمل وفد بھیجنے پر رضامند ہوگئے ہیں۔ افغانستان میں قیام امن کیلئے کثیر الفریقی مذاکرات کی تجویز روس نے پیش کی تھی اور اس سے قبل افغان صدر و امریکا اجلاس میں شرکت سے انکار کر چکے تھے،سابق افغان صدر کے ترجمان کایک اعلان میں اکہنا ہے کہ صدرحامد کرزئی ضرور اس مذاکراتی عمل میں شرکت کرینگے کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ طالبان کے ساتھ بات چیت کا کوئی بھی موقع ضائع نہیں کرنا چاہیے۔تفصیلات کے مطابق روس کی وزارتِ خارجہ نے ہفتے کو ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ مذاکرات نو نومبر کو ماسکو میں ہوں گے جن میں افغان طالبان کا وفد بھی شریک ہوگا۔بیان کے مطابق یہ پہلا موقع ہوگا کہ قطر میں واقع طالبان کے سیاسی دفتر کا کوئی وفد کسی اعلیٰ سطحی بین الاقوامی اجلاس میں شریک ہوگا۔روس کے مطابق اجلاس میں شرکت کے لیے بھارت، ایران، پاکستان، چین اور امریکہ کو بھی دعوت نامے بھیجے گئے ہیں۔لیکن تاحال یہ واضح نہیں کہ آیاان میں سے کون سے ممالک روسی دعوت کے جواب میں ان مذاکرات میں حصہ لیں گے۔روسی حکومت نے رواں سال اگست میں افغانستان میں قیامِ امن کیلئے اپنی میزبانی میں کثیر الفریقی مذاکرات کی تجویز پیش کی تھی۔اس کے اگلے مہینے روسی حکومت نے 12 ممالک اور افغان طالبان کواس مجوزہ اجلاس میں شرکت کی دعوت دی تھی۔ابتدائی طور پر یہ اجلاس اکتوبر میں ہونا تھا لیکن افغان صدر اشرف غنی نے یہ کہہ کر روس کی دعوت مسترد کردی تھی کہ افغان طالبان کے ساتھ کوئی بھی بات چیت افغان حکومت کے تحت ہی ہونی چاہیئے۔

TOPPOPULARRECENT