روس کی فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان ثالثی کی پیشکش

روم۔ 24 نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) روس نے فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان ثالثی کی پیشکش کی ہے۔ روسی وزیر خارجہ سیرگی لافروف نے کہا ہے کہ ان کا ملک فلسطینی اور اسرائیلی قیادت کے درمیان ثالثی کیلئے کردار ادا کرنے کو تیار ہے۔روم کے دو روزہ دورے کے دوران صحافیوں سے بات کرتے ہوئے روسی وزیر خارجہ نے کہا کہ فلسطین اور اسرائیل کے درمیان جاری کشمکش کو بات چیت اور مذاکرات کیلئے ذریعے حل کیا جانا چاہئے۔ اس سلسلے میں روس اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔ادھر فلسطین کے محصور علاقے غزہ کی پٹی میں حق واپسی مظاہرے جاری رہیں۔ مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ غزہ کی پٹی پر کئی سال سے مسلط کردہ معاشی پابندیاں ختم کرتے ہوئے فلسطینی پناہ گزینوں کو واپس ان کے گھروں کو جانے کی اجازت دی جائے۔یہ مظاہرے 30 مارچ سے جاری ہیں اور اسرائیلی فوج کی جانب سے فلسطینی مظاہرین کے خلاف طاقت کا بیجا استعمال کیاجا رہا ہے جس کے نتیجے میں اب تک 235 فلسطینی شہید اور 12 ہزار سے زاید زخمی ہوچکے ہیں۔ اس دوران اسرائیلی فوج کے دو اہلکار بھی ہلاک ہوئے ہیں۔گزشتہ منگل کو فلسطینیوں اور اسرائیل نے مصر کی ثالثی کے تحت عارضی جنگ بندی پر اتفاق کیا تھا۔ کئی دہوں سے جاری فلسطین ۔ اسرائیل تنازعہ میں سراسر عام لوگوں کا نقصان ہورہا ہے کیونکہ کوئی بھی بڑی طاقت دیرپا امن قائم نہیں کرپائی ہے۔

TOPPOPULARRECENT