Tuesday , May 22 2018
Home / کھیل کی خبریں / روہت اپنی قیادت میں پہلی کامیابی سے کافی مطمئن

روہت اپنی قیادت میں پہلی کامیابی سے کافی مطمئن

موہالی ۔14 ڈسمبر(سیاست ڈاٹ کام ) ہندستانی کرکٹ ٹیم کے کارگذار کپتان روہت شرما نے کہا ہے کہ دھرمشالہ میں ہوئی شرمناک شکست کے بعد سیریز میں واپسی کے لئے موہالی جیسی کامیابی ان کے لئے انتہائی ضروری تھی اور بطور کپتان ملی یہ فتح ان کے لیے اہم ہے ۔کپتان روہت شرما (ناٹ آؤٹ 208) کی شاندارتیسری ڈبل سنچری کے بعد اپنے ساتھیوں کی بہترین بولنگ کی بدولت سری لنکا کو دوسرے ونڈے میں 141 رنز سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز میں 1-1 سے برابری حاصل کر لی ۔روہت نے میچ کے بعد کہا آج کا دن میرے لئے بہت اہم ہے ۔ میرے لئے یہ میچ جیتنا انتہائی ضروری تھا، خاص طور پر دھرمشالہ کی ذلت آمیز شکست سے نمٹنے کے لئے یہ کامیابی انتہائی ضروری تھی ۔ہم نے شروع سے ہی بہترین بیٹنگ کی۔شکھر دھون نے ٹیم کو بہترین آغاز دیا۔ شریس ایر کو دیکھ کر ایسا نہیں لگا کہ وہ اپنا دوسرا ہی ونڈے کھیل رہے ہیں۔ ونڈے کرکٹ میں روہت سب سے زیادہ تین ڈبل سنچریاں بنانے والے دنیا کے پہلے بیٹسمین بن گئے ہیں۔ یہ ان کا ونڈے میں انفرادی طور پر تیسرا سرفہرست ا سکور ہے جبکہ ونڈے کی تاریخ میں مجموعی طور یہ چھٹا بہترین اسکور بھی ہے ۔روہت نے اپنی سولہویں ونڈے سنچری 115 گیندوں میں مکمل کی جبکہ 133 گیندوں میں 150 رن پورے کئے ۔ اس کے بعد انہوں نے چوکے اور چھکے لگاتے ہوئے 151 گیندوں میں 200 رن پورے کئے ۔ روہت نے اپنی ڈبل سنچری مکمل کرنے کے ٹھیک بعد چھکا لگاکر اپنی بہترین بیٹنگ کی خوشی منائی۔کپتان نے کہا میں نے پہلے100 رن بہت تاخیر سے بنائے اس کے بعد مجھے احساس ہوا کہ میں یہاں تک نہیں روکوں مجھے آگے بھی کھیلنا ہے اور میں حالات کے پیش نظر گیند کی لائن میں ہی شاٹس کھیلتا گیا۔میں نے گزشتہ ڈبل سنچریوں میں بھی اسی ذہن کے ساتھ بیٹنگ کی تھی۔30 سالہ روہت نے اسی کے ساتھ ونڈے کیرئیر کا اپنا تیسرا سب سے زیادہ اسکور بھی بنا ڈالا۔ ون ڈے میں تین ڈبل سنچریاں بنانے والے روہت کا سری لنکا کے خلاف یہ دوسرا بڑا سکور بھی ہے ۔ انہوں نے 2014 میں سری لنکا کے خلاف اپنے کیرئیر کے سرفہرست 264 رنوں کی اننگز کھیلی تھی جبکہ2013 میں آسٹریلیا کے خلاف انہوں نے 209 رنز بنائے جو ان کی ونڈے میں پہلی ڈبل سنچری تھی۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ ٹیم کے طور پر ہم اسی سوچ کے ساتھ وشاکھاپٹنم میں بھی کھیلیں گے ۔ انہوں نے ماننا ہے کہ وہاں پر حالات مختلف ہوں گے لیکن ہمیں اس کے مطابق ہی اپنی طاقت پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے کھیلنا ہے ۔

 

TOPPOPULARRECENT