Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / روہت خودکشی معاملہ میں حقائق کی پردہ پوشی ،احتجاجی طلباء سے کجریوال کا اظہار ِ یگانگت

روہت خودکشی معاملہ میں حقائق کی پردہ پوشی ،احتجاجی طلباء سے کجریوال کا اظہار ِ یگانگت

حیدرآباد۔21جنوری(سیاست نیوز) چیف منسٹر دہلی ارویند کجریوال نے حیدرآباد یونیورسٹی میںدلت طلبہ کیساتھ پیش آئے واقعہ کی حقیقت کو چھپانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ سوشیل میڈیا کے ذریعہ جو باتیں سامنے آرہی ہیں ان سے صاف ظاہر ہے کہ روہت ویمولہ اور اس کے چار ساتھیوں کو یونیورسٹی سے نکالے جانے کے پیچھے ایک بڑی سازش کارفرما ہے ۔کجریوال  نے آج حیدرآباد سنٹر ل یونیورسٹی پہنچ کر احتجاجی دھرنے پر بیٹھے یونیورسٹی طلبہ سے اظہار یگانگت کیا۔ اس موقع پر عآپ پارٹی کے قومی ترجمان اشیش کھیتان‘پروفیسر پی ایل ویشوویشو رائو ‘ پربھاکر ریڈی عآپ تلنگانہ کنونیر بھی موجود تھے۔قبل ازیں کجریول نے امبیڈکر اسٹوڈنٹ یونین کے معطل مزید چار طلبہ کے علاوہ روہت ویمولہ کی ماں رادھیکا سے بھی ملاقات کی ۔اپنے خطاب کے دوران ارویندر کجریول نے کہاکہ جس سشیل کمار نامی اے بی وی پی لیڈر پر حملے کا الزام عائد کرتے ہوئے مرکزی وزیر بنڈارو دتاتریہ نے ایچ آر ڈی منسٹر سمریتی ایرانی کو مکتو ب روانہ کیا تھا ، اسے اپینڈکس کی شکایت کی وجہ سے اسپتال میںشریک کیا گیا تھا۔اس بات کا انکشاف ہاسپٹل کی رپورٹ سے ہوتا ہے جس کا ابھی میں نے مشاہدہ بھی کیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ نہ صرف دواخانہ کی رپورٹ بلکہ سابق یونیورسٹی رجسٹرار نے عدالت میںاپنا حلفیہ بیان بھی داخل کیاہے جس میںانہوں نے واضح کردیا کہ امبیڈکر اسٹوڈنٹ یونین قائد روہت اور اے بی وی پی کے سشیل کمار کے درمیان میںکوئی ہاتھا پائی نہیںہوئی ، اس کے علاوہ رجسٹرار نے اپنے حلفیہ بیان میں یہ بھی کہا کہ ان معطل کئے گئے طلبہ کو تعلق نہایت پسماندہ طبقے سے ہے لہذا ان کومعطل نہیں کیاجانا چاہئے ۔ باوجود اسکے روہت اور ان کے چار ساتھیوں کو مرکزی وزیربنڈارودتاتریہ نے اپنے مکتوب میںقوم دشمن ‘ ذات پات کی عصبیت رکھنے والا اور فرقہ پرست قراردیتے ہوئے ان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیاتھا ۔ کجریوال نے مرکزی وزیردتاتریہ اور سمرتی ایرانی سے استفسار کیا کہ امبیڈکر کے نظریات کو عام کرنے اور اس بارے میں بات کرنا ملک سے غداری ہوتی ہے یا پھر اس کو فرقہ پرستی قراردینا صیحح ہوگا؟ کجریوال نے کہاکہ ایف آئی آر میں ترمیم کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے مزیدکہاکہ مرکزی وزیر ایچ آرڈی سمرتی ایرانی کا نام ایف آئی آر میںشامل کیا جائے اور واقعہ کو توڑ مروڑ کر پیش کرنے کے لئے سمرتی ایرانی کوقوم سے معافی مانگنے کی ضرورت ہے ۔ کجریوال نے روہت ویمولہ کی موت کیخلاف جاری احتجاج کی تائیدوحمایت کرنے والے ٹیچرس کی ستائش کی جنھوں نے 21جنوری سے اپناکام کاج بند کرنے کی یونیورسٹی انتظامیہ کو نوٹس جاری کردی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT