Wednesday , December 13 2017
Home / دنیا / روہنگیاؤںپر فوجی مظالم بند کرنے کا مطالبہ

روہنگیاؤںپر فوجی مظالم بند کرنے کا مطالبہ

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹونیو گٹیرس کا جنرل اسمبلی کے افتتاحی اجلاس سے خطاب
اقوام متحدہ۔ 19 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) معتمد عمومی اقوام متحدہ انٹونیو گٹیرس نے آج میانمار پر زور دیا کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کے خلاف فوجی مہم بند کردے، صرف چند گھنٹے قبل میانمار کی قائد آنگ سان سوچی بین الاقوامی احتجاج کو خاموش کرنے سے قاصر رہی تھیں حالانکہ ان کی تقریر کا ایک مدت سے انتظار تھا۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے گٹیرس نے کہا کہ انہوں نے سوچی کے عہد کا نوٹ لیا ہے کہ وہ سابق معتمد عمومی اقوام متحدہ کوفی عنان کی رپورٹ میں شامل سفارشات پر عمل آوری کریں گی۔ جن میں روہنگیاؤں کو میانمار کی شہرت دینے پر زور دیا گیا ہے۔ گٹیرس نے کہا کہ وہ واضح کردینا چاہتے ہیں کہ میانمار کے عہدیداروں کو فوجی کارروائی فوری طور پر روک دینی چاہئے اور انسانی بنیادوں پر بلا رکاوٹ رسائی کی اجازت دینی چاہئے۔ 4 لاکھ 20 ہزار سے زیادہ روہنگیا میانمار کی شمالی ریاست راکھین میں تشدد سے گھبرا کر فرار ہونے پر مجبور ہوگئے ہیں۔ اس تشدد کو اقوام متحدہ نے ’’نسل کشی‘‘ قرار دیا ہے۔ 11 لاکھ روہنگیا مسلمان برسوں سے تعصب کا شکار ہیں۔ انہیں شہریت سے محروم رکھا جارہا ہے حالانکہ ان کی جڑیں ملک میں گہرائی تک پیوست ہیں ۔ میانمار کے دوسرے نائب صدر ہنری وانگ تھیو کل جنرل اسمبلی کے شہ نشین پر موجود ہوں گے جبکہ سوچی نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت نہیں کریں گی۔

TOPPOPULARRECENT