Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / روہنگیاؤں سے ہمدردانہ رویہ اختیار کرنے پر زور

روہنگیاؤں سے ہمدردانہ رویہ اختیار کرنے پر زور

مسئلہ کے حل کیلئے مائنمار سے بات چیت کیلئے مرکز سے مایاوتی کی درخواست
لکھنؤ ۔ 13 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی نے ہندوستان میں پناہ کے طلبگار ہزاروں روہنگیا مسلم خاندانوں کے ساتھ انسانی جذبہ پر مبنی رویہ اختیار کرنے مرکز سے درخواست کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ روہنگیا مسلمانوں کے مسائل کی یکسوئی کیلئے حکومت کو بنگلہ دیش اور مائنمار کی حکومتوں سے بات چیت کرنا چاہئے۔ مایاوتی نے یہاں جاری کردہ بیان میں کہا کہ ’’مائنمار کی سرحدی ریاست میں گڑبڑ و بے چینی کے سبب لاکھوں روہنگیا مسلمان بنگلہ دیش اور ہندوستان کی چند ریاستوں میں پناہ لے رہے ہیں چونکہ مودی حکومت کا طرزعمل واضح نہیں ہے۔ چنانچہ اس صورتحال پر دوہری الجھن پیدا ہوگئی ہے‘‘۔ یوپی کی سابق چیف منسٹر نے کہا کہ ’’حکومت ہند کو اس مسئلہ پر انسانی جذبہ و رویہ اختیار کرنا چاہئے کیونکہ یہ ہدنوستان کی روایت رہی ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ روہنگیا مسلمانوں کے مسائل کی یکسوئی کیلئے بنگلہ دیش اور مائنمار سے بات چیت کرے تاکہ روہنگیا مسلمانوں کے ان کے اپنے ملک سے فرار ہونے کے سلسلہ کو روکا جاسکے‘‘۔ اقوام متحدہ کے تخمینہ کے مطابق ہندوستان میں 40,000 روہنگیا مقیم ہیں۔ ان میں 16,000 کو پناہ گزینوں کے قانونی دستاویزات موصول ہوئے ہیں۔ مملکتی وزیرداخلہ کرن رجیجو نے 5 ستمبر کو کہا تھا کہ روہنگیا غیرقانونی مہاجرین ہیں جنہیں ملک بدر کردیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT