Friday , December 15 2017
Home / دنیا / روہنگیا مسئلہ سوچی اور کیری کو سخت مشکلات درپیش

روہنگیا مسئلہ سوچی اور کیری کو سخت مشکلات درپیش

نیپیڈا۔22 مئی (سیاست ڈاٹ کام) آنگ سانگ سوچی نے آج لفظ روہنگیا کے استعمال کے بارے میں تنازعہ کی یکسوئی کردی اور کہا کہ روہنگیا میانمار کے بے گھر بے ریاست مسلم اکثریت ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اصطلاح روہنگیا سے میانمار میں فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا ہوتی ہے۔ بدھ مت کے پیرو ملک گیر سطح پر اس اصطلاح کے خلاف احتجاجی مظاہرے کرچکے ہیں۔ وزیر خارجہ امریکہ جان کیری نے سوچی کے ساتھ ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں سوچی کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ ان کا رویہ اس پیچیدہ مسئلہ کے ساتھ ہمدردانہ ہے۔ وہ اس معاملہ کی حقیقت کو اچھی طرح سمجھتی ہیں لیکن میانمار کا ایک گروپ جو گروپ جو خود کو روہنگیا قرار دیتا ہے اس حقیقت سے ناواقف ہے۔ امریکہ تمام نسلی گروپس کے حقوق کی تائید کرتا ہے اور ان کی خواہش کے مطابق ان کی شناخت کو تسلیم کرتا ہے۔ حال ہی میں امریکہ پر بدھ مت کے سخت گیر پیروئوں نے دبائو ڈالا تھا کہ امریکہ کے سفیر لفظ روہنگیا ایسی مسلم اقلیت کے لئے استعمال کریں جنہیں مجرم قرار دیا گیا ہے لیکن جان کیری نے اس اصطلاح کو بھی ترک کردینے کی خواہش کی۔

TOPPOPULARRECENT