Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / روہنگیا مسلمانوں پر ظلم و بربریت ناقابل قبول

روہنگیا مسلمانوں پر ظلم و بربریت ناقابل قبول

علماء کرام ، دانشور حضرات اور عوام کا شدید ردعمل
حیدرآباد۔/10ستمبر، ( پریس نوٹ) حیدرآباد کے اکابر علماء و مشائخ کی نگرانی میں شہر کی سرکردہ مذہبی، رفاہی، سماجی اور صحافتی تنظیموں کا ایک اجلاس بعنوان ’’ روہنگیا کے مظلوم مسلمان اور ہماری ذمہ داری ‘‘ 9 ستمبر کو پالکی گارڈن نزد خانقاہ موسویہ ادارہ خطیب دکن کے زیر اہتمام منعقد ہوا جس میں برما کے مظلوم روہنگیا مسلمانوں کی موجودہ صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس کی صدارت مولانا سید کاظم پاشاہ قادری الموسوی سجادہ نشین خانقاہ موسویہ نے کی۔ مولانا سید قبول بادشاہ قادری شطاری معتمد صدر مجلس علماء دکن نے بتایا کہ روہنگیائی مسلمانوں پر ظلم و ستم نے ساری دنیا کو حیران کردیا ہے۔ امت مسلمہ کا یہ فریضہ بنتاہے کہ وہ بے قصور و لاچار مسلمانوں کی امداد کے لئے آگے آئے اور میانمار کی ظالم حکومت کو اپنے احساسات اور جذبات سے واقف کروائیں۔ آج ہندوستان ہی نہیں بلکہ ساری دنیا کے مسلمانوں میں برما کے مظلوم مسلمانوں پر ہونے والے ظلم کے متعلق بے چینی پائی جاتی ہے اور اگر انسانی حقوق کے ادارہ اب آگے نہ بڑھیں تو حالات بد سے بدتر ہوجائیں گے۔ مولانا قاضی سید اعظم علی صوفی قادری صدر کل ہند جمعیتہ المشائخ نے کہا کہ برما کے مسلمانوں کی نسل کشی کے پیچھے طاغوتی قوتیں کار فرما ہیں، سرائیل جو کہ مسلمانوں کا سب سے بڑا دشمن ہے اور اس نے برما میں مسلمانوں کی قتل و غارت گری میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ میانمار کے افراد کے ہاتھوں میں ہتھیار تھما کر اسرائیل نے حالات مزید بگاڑدیئے ہیں۔ اجلاس میں مولانا سید حسن ابراہیم حسینی قادری جانشین حضرت شیخ الاسلامؒ ،مولانا سید محمود پاشاہ قادری ذرین کلاہ جانشین حضرت سلطان لواعظین ؒ ، مولانا سید فضل اللہ قادری الموسوی سجادہ نشین بارگاہ موسویہ ، مولانا صوفی مظفر علی ابوالعلائی سجادہ نشین ، مولانا سید محمد علی قادری الہاشمی صدر مرکزی مجلس قادریہ، مولانا سید رضوان پاشاہ قادری صدر دی قرآن اکیڈیمی ، مولانا حامد حسین حسان فاروقی نگران سنی دعوت اسلامی ، مولانا سید نعمت اللہ قادری مؤدب جامعہ نظامیہ ، مولانا صوفی زبیر علی ابوالعلائی، مولانا صوفی ذاکر علی دانش ایڈوکیٹ ، مولانا سید بندگی بادشاہ قادری معتمد جمعیتہ المشائخ، مولانا حبیب احمد الحسینی ناظم منہاج القرآن انڈیا، مولانا سید اسحق محی الدین قادری ناظم باب العلم انوار محمدی کے علاوہ کثیر تعداد میں علماء و مشائخ ، دانشوران قوم و ملت شریک تھے۔
٭٭ برماکے شہری جو عرصے دراز سے برما میں مقیم ہیں آج ان پر بدھسٹوں کی جانب سے اور حکمران جماعت کی فوج نے جو بربریت کا مظاہرہ اور چھوٹے معصوم بچوں ، بیمار و ضعیف بوڑھے مرد و عورتوں پر جو ظلم کیا ہے اور جوان لڑکیوں کی عصمت ریزی کی گئی ہے اس سے ساری انسانیت کا سرشرم سے جھک گیا ہے مگر روہنگی مسلمان اپنے ایمان پر قائم رہتے ہوئے جلاوطنی اختیار کررہے ہیں۔ انہیں بھی یہ ظالم حکمران نہیں بخش رہے ہیں انہیں قتل کیا جاکر سمندر میں پھینک دیا جارہا ہے اور برما کی سرحد جن ممالک سے ملتی ہے وہاں ان مسلمانوں کو داخل ہونے نہیں دیا جارہا ہے ایسے میں تمام مسلم ممالک اپنے اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے برما میں اس خونی شیطانی قتل عام کو روکنے کیلئے ثابت قدم اٹھائیں اور حکومت برما کو مجبور کریں کہ وہ اس شیطانی کھیل سے باز آئے اور ملک بدر ہونے والے روہنگی مسلمانوں کی آبادکاری پر توجہ دیں اور ان کی امداد کریں۔
٭٭ خطیب اہل سنت محمد ضیاء عرفان قادری حسامی نے میانمار کے حاکموں کا غیر انسانی سلوک مسلمانوں کا قتل عام پر شدید رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دنیا میں انسانیت مرچکی ہے انسان، انسان کے خون کا اس قدر پیاسا ہوگیا ہے کہ قتل عام کے جنون نے میانمار میں جو خون کی ہولی کھیلی اور خواتین کی آبرو ریزی ہورہی ہے تو مکانوں کو جلادینے کے انسانیت سوز حرکات سے دل کانپنے لگا۔ ہر ذی روح کا زندہ رہنا مشکل ہوگیا ہے ۔ انہوں نے امید ظاہرکی کہ ان ظالموں پر غضب الہی نازل ہوگا اور دنیا دیکھ لے گی کہ وہ نیست و نابود ہوجائیں گے، آہ مظلومین اپنا اثر دکھائے گی۔
٭٭ دنیا کے تمام امن و انصاف پسند دہشت گردی کی مذمت کرنے والوں کو روہنگیا مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے ظلم و بربریت کی مذمت کے ساتھ ساتھ مستقل پرامن حل تلاش کرنا چاہیئے۔ ان خیالات کا اظہار مولانا حبیب الحسن صدیقی جنرل سکریٹری علماء بورڈ نے بورڈ کے منعقدہ اجلاس میں کیا۔ مولانا نے کہا کہ مذہب اور علاقہ واریت سے اُٹھ کر انسانی حقوق کے تحفظ کیلئے دنیا کی بڑی طاقتوں کو اس کا ایسا پرامن حل تلاش کرنا چاہیئے کہ بے قصور لوگوں کا قتل عام بند ہو۔ شرکائے اجلاس نے روہنگیا کے مسلمانوں کی نسل کشی پر اپنی سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بعض بڑی طاقتوں کی معنی خیز خاموشی ان کی باطینی کیفیت کا آئینہ دار ہے۔ مسلمانوں کو چاہیئے کہ اجتماعیت کے ساتھ بارگاہ الہی میں رجوع ہوکر کثرت سے توبہ و استغفار کریں۔ مولانا نقی امام خان رضوی صدر سنی علما بورڈ کی رقت انگیز دعا امن وامان اور خوشحالی کے ساتھ اجلاس کا اختتام عمل میں آیا۔

TOPPOPULARRECENT