Monday , December 11 2017
Home / ہندوستان / روہنگیا پر حکومت کا موقف مذہب یا سیاست پر مبنی نہیں : رام مادھو

روہنگیا پر حکومت کا موقف مذہب یا سیاست پر مبنی نہیں : رام مادھو

کیا تبت کی جلاوطن حکومت کو خارج کیا جائے گا : عمر عبداللہ ، پاکستان سے گریراج کا مطالبہ
نئی دہلی۔ 19 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے جنرل سیکریٹری رام مادھو نے آج کہا کہ مرکز کی حکومت کا روہنگیاؤں کے مسئلہ پر موقف قومی مفادات پر مبنی ہے، سیاست یا مذہب پر مبنی نہیں۔ انہوں نے پرزور انداز میں اس نظریہ کو مسترد کردیا کہ روہنگیاؤں کو ہندوستان میں انسانی بنیادوں پر ہندوستان میں قیام کی اجازت دی جانی چاہئے اور ان کے مفادات کی دیکھ بھال کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے ایک ارب 30 کروڑ کی آبادی ہے اور ان کے مفادات حکومت کی اولین ترجیح ہیں۔ سرینگر سے موصولہ اطلاع کے بموجب نیشنل کانفرنس کے قائد سابق چیف منسٹر جموں و کشمیر عمر عبداللہ نے ان افراد پر اعتراض کیا جو روہنگیا مسلمانوں کے ملک سے اخراج کا مطالبہ کررہے ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا یہ لوگ تبت کی جلا وطن حکومت کو بھی ملک سے خارج کرنے کا مطالبہ کریں گے۔ جموں و کشمیر اسمبلی میں قائد اپوزیشن عمر عبداللہ نے روہنگیا مسلمانوں سے اخراج کے مطالبہ کی خاص طور پر سپریم کورٹ میں مرکزی حکومت کے داخل کردہ حلف نامہ کی روشنی میں جس میں انہیں قومی صیانت کیلئے سنگین خطرہ قرار دیا گیا ہے ، شدت سے مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ مقدس مذہبی شخصیت دلائی لاما عنقریب اس ملک میں ناگوار شخصیت بن جائیں گے کیونکہ وہ ایک طویل مدت سے ہندوستان میں جلاوطن حکومت قائم کئے ہوئے ہیں۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب پاکستان زیرسرپرستی کشمیر میں دہشت گردی کا حوالہ دیتے ہوئے مرکزی وزیر گریراج سنگھ نے جو اپنے متنازعہ بیانات کیلئے شہرت رکھتے ہیں ، کہا کہ پاکستان کو چاہئے کہ روہنگیائی مسلمانوں کو بھی اپنے پاس پناہ دے جیسا کہ اس نے جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو پناہ دے کھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرحد پار سے ہندوستان کی سرزمین پر دہشت گرد کارروائیوں کے سرپرست کو پاکستان میں ہمیشہ پناہ حاصل ہوتی رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT