Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / لوک سبھا اور ریاستی اسمبلیوں کے ایک ساتھ انتخابات کی تجویز

لوک سبھا اور ریاستی اسمبلیوں کے ایک ساتھ انتخابات کی تجویز

مالیاتی سال جنوری تا ڈسمبر ہونا چاہئیے ، جی ایس ٹی متعارف کرنے کی تیاریاں ،نیتی آیوگ اجلاس سے مودی کا خطاب
نئی دہلی ۔ /23 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے لوک سبھا اور ریاستی اسمبلیوں کے بیک وقت انتخابات کے انعقاد کی تائید کی اور مالی سال کو جنوری تا ڈسمبر مقرر کرنے کی بھی تجویز دی ۔ آج نیتی آیوگ گورننگ کونسل کے تیسرے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ معاشی اور سیاسی بدانتظامی کی وجہ سے ہندوستان کافی متاثر ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بروقت انتظام و انصرام نہ ہونے کی بنا کئی اچھی شروعات اور اسکیمات متوقع نتائج برآمد کرنے میں ناکام رہی ہیں ۔ وزیراعظم نے پارلیمنٹ اور ریاستی اسمبلیوں کے ایک ساتھ انتخابات کا انعقاد یقینی بنانے کیلئے مباحث و مذاکرے شروع کرنے کی ضرورت پر زور دیا ۔ گڈس اینڈ سرویسیس ٹیکس (جی ایس ٹی) کے بارے میں وزیراعظم نے ریاستوں سے بنا کسی تاخیر قانون سازی کا مرحلہ پورا کرنے پر زور دیا تاکہ یکم جولائی سے اسے نافذ العمل کیا جاسکے ۔ جی ایس ٹی کے نتیجہ میں سنٹرل اکسائز ، سرویس ٹیکس ، ویلیو ایڈیڈ ٹیکس اور دیگر مقامی ٹیکسیس ختم ہوجائیں گے اور یکم جولائی سے جی ایس ٹی ان سب کا متبادل ہوگا ۔ وزیراعظم نریندر مودی نے آج تمام ریاستوں پر زور دیا کہ وہ انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ کو تیز تر کریں ۔ اس پر سرمایہ مصارف کے عمل کو تیز بنائیں تاکہ معاشی ترقی کی سطح بلند ہوسکے ۔ یہ نیتی آیوگ 15 سال کے طویل ویژن پر کام کررہا ہے ۔ اس کے لئے 7 سالہ متوسط مدت کی حکمت عملی بنائی گئی ہے اور 3 سالہ ایکشن ایجنڈہ ترتیب دیا گیا ہے ۔ اس اجلاس میں چیف منسٹرس ، مرکزی وزراء اور سینئر عہدیداروں نے شرکت کی ۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ ’’نئے ہندوستان‘‘ کا ویژن صرف اس وقت پورا ہوسکتا ہے جب تمام ریاستیں اپنا تعاون دراز کریں اور اپنی کوششوں کو مشترکہ طور پر بروئے کار لائیں ۔ ’’ٹیم انڈیا‘‘ آج یہاں جمع ہے ۔ تاکہ بدلتے عالمی رجحانات کے لئے ملک کو تیار کیا جاسکے اور اس کے تعلق سے راہیں نکالنے پر غور و خوص کرسکیں ۔ آج اس اجلاس میں شریک تمام کی یہ اجتماعی ذمہ داری ہے کہ وہ ہندوستان کے ویژن 2022 ء پر عمل کریں جو آزادی کی 75 ویں سالگرہ ہے ۔ ہمیں یہ دیکھنا ضروری ہے کہ آخر ہم اپنے مقصد کو پورا کرنے کے لئے کتنی تیزی سے کام کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے احساس ظاہر کیا کہ نیتی آیوگ نے ہندوستان کو ترقی کی سمت چھلانگ لگانے کے لئے کئی اقدامات کئے ہیں ۔ وزیراعظم نے ریاستی حکومتوں ، خانگی شعبہ اور شہری سماج سے کہا کہ وہ ترقی کے شعور کے ساتھ کام کریں تو اس ملک کو ہر شعبہ میں فروغ حاصل ہوگا ۔ نیتی آیوگ کو وفاقی ادارہ کے ساتھ تعاون کرنے والا بنایا گیا ہے جو ان نظریات کو ایک استحکام بخشتا ہے ۔ اب چیف منسٹروں کو اپنے بجٹ یا منصوبوں کی منظوری کے لئے نیتی سے رجوع ہونے کی ضرورت نہیں ہوگی بلکہ اس ادارہ نے ہی اپنے حدود سے آگے ہوکر حکومتوں کی مدد کی ہے ۔ ریاستیں بھی پالیسی وضع کرنے کے عمل میں اپنا تعاون کرسکتے ہیں ۔ وزیراعظم مودی نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ ریاستوں کو سال 2014-15 ء کے درمیان جو فنڈ جاری کیا گیا تھا اس میں 40 فیصد اضافہ ہوا ہے  اور مرکزی اسکیمات سے مربوط کردہ فنڈس میں 40 فیصد سے گھٹاکر 25 فیصد ہوا ہے ۔
ریاستوں کو چاہئیے کہ وہ سرمایہ مصارف اور انفراسٹرکچر کو تیز تر کریں ۔ ملک میں کمزور انفراسٹرکچر معاشی ترقی کی راہ میں رکاوٹ کھڑا کرنا ہے ۔ بنیادی انفراسٹرکچر جسے سڑکوں کی تعمیر ، بندرگاہیں ، برقی پیداوار کے پراجکٹس اور ریل پراجکٹس پر زیادہ سے زیادہ مصارف کو یقینی بنایا جائے تو بلاشبہ اس سے ترقی کی شرح میں اضافہ کرنے میں مدد ملے گی ۔ نیتی آیوگ نے ملک کی معاشی ترقی کو تیز کرنے کے لئے 300 خصوصی حرکیاتی نکات وضع کئے ہیں ۔ اس ایکشن پوائنٹس کو نیتی آیوگ کے وائس چیرمین اروند پنگرایا نے پیش کیا ۔

TOPPOPULARRECENT