Thursday , August 16 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاستوں کے درمیان پانی کے تنازعات سے قومی ترقی متاثر

ریاستوں کے درمیان پانی کے تنازعات سے قومی ترقی متاثر

مسائل کی یکسوئی کے لیے قومی سطح پر ایک ہی ٹریبونل قائم کرنے مرکزی مملکتی وزیر کا اعلان
حیدرآباد ۔ 20 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : مرکزی مملکتی وزیر آبرسانی ارجن رام میگہوال نے کہا کہ ریاستوں کے درمیان پانی کے تنازعات سے قومی ترقی متاثر ہورہی ہے ۔ ان تنازعات کی یکسوئی کے لیے قومی سطح پر ایک ہی ٹریبونل قائم ہوگا بجٹ سیشن میں بل منظور کرنے کا اعلان کیا ۔ ارجن رام میگہوال کی قیادت میں آج حیدرآباد میں جنوبی ریاستوں کے وزرائے آبپاشی کا اجلاس منعقد ہوا ہے ۔ جس میں مختلف مسائل کا جائزہ لینے کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا مرکزی مملکتی وزیر آبرسانی نے بتایا کہ اس اجلاس میں جنوبی ہند کے 6 ریاستوں کے وزراء نے شرکت کی ۔ تمام مسائل اور تنازعات کا جائزہ لینے کے بعد وہ اس نتیجے پر پہونچے ہیں کہ قومی سطح پر ایک ہی ٹریبونل قائم کیا جائے آئندہ سے ریاستی سطح پر کوئی ٹریبونلس کام نہیں کریں گے ۔ مارچ اور اپریل میں بجٹ سیشن کے دوران اس بل کو منظور کیا جائے گا ۔ جنوبی ہند کی ریاستوں میں آبی تنازعات کو حل کرنے کے لیے ایک روڈ میاپ تیار کرنے پر بھی مذاکرات کی گئی ۔ مرکزی مملکتی وزیر نے کہا کہ ریاستوں کے درمیان پانی کے تنازعات سے قومی ترقی متاثر ہورہی ہے ۔ عدالتوں ، ٹریبونلس سے وقت ضائع ہورہا ہے ۔ برسوں ان تنازعات کی عدم یکسوئی سے مسائل پیچیدہ ہورہے ہیں ۔ جتنا جلد تنازعات حل ہوتے ہیں اتنی تیزی سے ترقی کی راہیں ہموار ہوتی ہیں ۔ ریاستی وزیر آبپاشی ہریش راؤ نے آبی تنازعات کی یکسوئی کے لیے قومی سطح پر ایک ہی ٹریبونل قائم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے بتایا کہ ایک ندی پر ایک ٹریبونل کے قیام سے وقت ضائع ہوتا ہے ۔ برجش کمار ٹریبونل گذشتہ 14 سال سے خدمات انجام دے رہا ہے ۔ مگر ابھی تک کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوا ۔ آر ڈی ایس کے معاملے میں پڑوسی ریاست آندھرا پردیش غیر یقینی صورت حال پیدا کررہی ہے اس معاملے میں مرکز سے مداخلت کرنے کی اپیل کی ۔ انہوں نے بتایا کہ ار ڈی ایس پر تلنگانہ ۔ آندھرا پردیش اور کرناٹک کے درمیان سہ رخی معاہدہ ہے اور اس کو عملی جامہ پہنانے کا مطالبہ کیا ۔ ہریش راؤ نے کہا کہ ریاست میں کوئی بھی نیا پراجکٹ تعمیر نہیں کیا جارہا ہے ۔ زیر التواء پراجکٹس کی تعمیرات کو تکمیل کیاجارہا ہے ۔ کالیشورم پراجکٹ بھی قدیم پراجکٹ ہونے کا مرکز نے خود ہی اعتراف کیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT