Tuesday , May 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاستی انتظامی اُمور کو عوام سے مربوط کرنے کلکٹرس کو ٹوئیٹر اکاؤنٹ

ریاستی انتظامی اُمور کو عوام سے مربوط کرنے کلکٹرس کو ٹوئیٹر اکاؤنٹ

انتظامیہ کو ٹوئیٹر پر سرگرم رہنے کی ہدایت، وزیر آئی ٹی تلنگانہ کے ٹی آر کا اقدام
حیدرآباد۔18فروری (سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ نے ریاستی انتظامیہ کو بہتر اور شفاف بنانے کیلئے انتظامی امور کو راست عوام سے مربوط کرتے ہوئے عوامی مسائل حل کرنے کے منصوبہ کے تحت تمام ضلع کلکٹرس کے ٹوئیٹر اکاؤنٹ کی شروعات کی اور خود ریاستی وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی مسٹر کے ٹی راما راؤ ٹوئیٹر پر سرگرم ہیں ۔ عوام کی جانب سے کی جانے والی نمائندگیوں پر ردعمل بھی ظاہر کرتے ہیں اور انہیں متعلقہ عہدیداروں کو متوجہ بھی کرواتے ہیں۔حکومت کی جانب سے تمام ضلع انتظامیہ کو بھی ٹوئیٹر پر سرگرم رہنے کی ہدایت جاری کی گئی ہیں لیکن ریاست کے تمام اضلاع میں سب سے کمزور ٹوئیٹر اکاؤنٹ کا استعمال ضلع حیدرآباد میں کیا جارہاہے ۔ ریاست کے تمام اضلاع بالخصوص ورنگل‘ محبوب نگر ‘ منچریال‘ سرسلہ ودیگر اضلاع میں کلکٹرس کے ٹوئیٹر اکاؤنٹس پر ضلع میں انجام دی جانے والی سرگرمیوں کی تفصیلات موجود ہیں لیکن ضلع حیدرآباد جسے ریاست تلنگانہ میں ٹکنالوجی کا مرکز قرار دیا جا رہاہے اس مقام پر ضلع کلکٹر کے ٹوئیٹر اکاؤنٹ کی حالت انتہائی ابتر ہے اور اب تک بھی ضلع کلکٹر حیدرآباد کی جانب سے کوئی تفصیلات ٹوئیٹر پر شئیر نہیں کی گئی ہے اور بہت کم نمائندگیاں ضلع کلکٹر کو بذریعہ ٹوئیٹر موصول ہوتی ہیں ۔ ریاست تلنگانہ میں محکمہ پولیس‘ بلدیہ‘ آبرسانی‘ برقی کے علاوہ دیگر محکمہ جات بھی ٹوئیٹر کے توسط سے شہریوں اور صارفین سے مربوط ہونے لگے ہیں لیکن حیدرآباد ضلع کلکٹر کی ٹوئیٹر سے بے اعتنائی سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ حیدرآباد ضلع انتظامیہ کو ٹکنالوجی کے ذریعہ شہریوں سے رابطہ میں رہنے میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ حیدرآباد ضلع انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق ٹکنالوجی شعبہ کا عملہ نہ ہونے کے سبب ٹوئیٹرکے ذریعہ انتظامیہ کی سرگرمیوں کو عوام تک پہنچانے کے علاوہ ٹوئیٹر کے ذریعہ عوامی شکایات کی وصولی سے اجتناب کیا جا رہاہے جبکہ دیگر اضلاع میں انتظامیہ اپنے ضلع میں ہونے والے جائزہ اجلاس اور ضلع کلکٹر کی سرگرمیوں کو عوام تک پہنچانے اور عوامی نمائندگیاں بذریعہ ٹوئیٹر وصول کرنے کی کوشش میں بڑی حد تک کامیاب بھی ہو رہے ہیں۔ ضلع انتظامیہ کے عہدیداروں نے ٹوئیٹر پر سرگرم نہ ہونے کی وجہ کے متعلق یہ بھی استدلال پیش کرنا شروع کردیا ہے اور کہا جا رہاہے کہ حیدرآباد میں ضروری خدمات مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآبادکے دائرہ میں آتی ہیں اسی لئے ضلع انتظامیہ سے عوامی رابطہ کی زیادہ ضرورت نہیں پڑتی اور ضلع کلکٹر کا دفتر محکمہ مال کی سرگرمیوں کی حد تک محدود ہوا کرتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT