Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ریاستی حکومتوں پر اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کی نعشوں کے ساتھ حکمرانی

ریاستی حکومتوں پر اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کی نعشوں کے ساتھ حکمرانی

کارپوریٹ طبقہ کی خوشامدی ، آلیر اور بھوپال انکاونٹرس کا ثبوت : جی لکشمن
تلنگانہ و آندھرا پردیش سیول لبرٹیز کمیٹی کا شدید ردعمل
حیدرآباد۔3نومبر(سیاست نیوز)آندھرا پردیش او رتلنگانہ سیول لبرٹیز کمیٹی نے ملکان گیری اور بھوپال انکاونٹر پر مرکز ی او رریاستی حکومتوں کو اپنی شدیدتنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ مذکورہ حکومتیں اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کی نعشو ں پر حکمرانی کرنا چاہتی ہیں تاکہ کارپوریٹ طبقے کی خوشنودی حاصل کی جاسکے۔ آج یہاں میڈیاسے بات کرتے ہوئے ریاستی صدر سیول لبر ٹیز پروفیسر جی لکشمن نے کہاکہ آلیر انکاونٹر کے بعد ملکان گیری اور بھوپال انکاونٹرسے یہ بات ثابت ہوگئی ہے ریاستی حکومتیں انکاونٹر کے نام پر معصوم اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کے لوگو ں کا خون بہارہی ہیں۔پروفیسر جی لکشمن نے آندھرا اور اڑیسہ سرحد کے ملکان گیری علاقے میں مائوسٹوں سے مدبھیڑ کے نام پر تیس سے زائد افراد کو گرے ہانڈس کی ٹیم نے ہلاک کردیا جس میں پندرہ خواتین او رلڑکیاں ہیںجن کی عمرپندرہ سال سے کم ہے۔ انہوں نے کہاکہ ملکان گیری کا انکاونٹر کا واقعہ فرضی اور ایک سوچی سمجھی سازش ہے۔ انہوں نے کہاکہ گرے ہانڈس کا غیرقانونی پولیس دستہ ہے جو حکومت کے اشاروں پر قبائیلی علاقوں میں مائوسٹوں کے نام پر معصوم قبائیلوں کا قتل عام کرتا ہے ۔ انہوں نے مذکورہ دستے پر امتناع عائد کرنے کی ضرورت پر بھی زوردیا۔انہوں نے کہاکہ اگر ملکان گیری کا واقعہ حقیقت میںانکاونٹر ہوتا قبائیلی عورتوں کے سر او رپیر دھڑ سے الگ نہیںہوتے۔ انہوں نے کہاکہ پہلے انہیںگرفتار کرکے ان پر تھرڈ ڈگری استعمال کیا گیا اور اس کے بعد انہیںقتل کرکے ان کے سرپیر کاٹے گئے بعد میں مردوں پر گولیاں چلاکر انکاونٹر کاڈرامہ کیاگیا۔ پروفیسر جی لکشمن نے کہاکہ آندھرا کے چیف منسٹر کی حیثیت سے جائزہ لیتے وقت بھی چندرابابو نائیڈو نے مائوسٹوں کے نام پر بے قصوروں کو ہلاک کیا تھا۔نائب صدر وی راگھوناتھ نے میڈیاسے بات کرتے ہوئے کہاکہ مرکزی حکومت کی ایماء پر آلیر سے ملکان گیری اور بھوپال تک انکاونٹر کے نام پر بے قصور لوگوں کے قتل کاکام کیاجارہا ہے۔آلیر سے لے کر ملکان گیری اور بھوپال تک کے تمام انکاونٹرس کی عدالتی تحقیقات کی جانی چاہئے تاکہ حقائق کومنظر عام پر لایاجاسکے۔انہوں نے کہاکہ قومی سیول لبرٹیز کمیٹی کی ایک ٹیم 9اور 10نومبر کو مدھیہ پردیش روانہ ہوگی جہاں پر وہ بھوپال فرضی انکاونٹر کی تحقیقات کرتے ہوئے حقیقت سے آگاہی رپورٹ تیار کرے گی ۔ انہوں نے کہاکہ ماضی میںآلیرانکاونٹر پر بھی ہم نے تحقیقات کرتے ہوئے اسے فرضی قراردیا تھا۔ انہوںنے کہاکہ مرکزی او رریاستی حکومتیں بالخصوص تلنگانہ اور آندھرا میںدہشت گردی اور نکسلزم کے نام پر بے قصور افراد کے خون بہانے کاسلسلہ اب ختم ہوناچاہئے۔ انہوں نے مائوسٹ لیڈر رام کرشنا( آر کے) کو عدالت میںپیش کرنے اور ملکان گیری انکاونٹر کی عدالتی تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا۔ این نارائن رائو جنرل سکریٹری‘ پی ایم راجو سٹی پریسڈنٹ ‘ محمداسمعیل سکریٹری گریٹر حیدرآباد کمیٹی‘ ٹی لکشمن سٹی نائب صدر بھی اس موقع پر موجودتھے۔

TOPPOPULARRECENT