Thursday , December 13 2018

ریاست آندھراپردیش کے وزیر کو برطرف کیا جائے

خاتون سے بدسلوکی پر گریٹر حیدرآباد صدر اقلیتی کانگریس عبداللہ سہیل کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 5 مارچ (سیاست نیوز) صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر شیخ عبداللہ سہیل نے مسلم خاتون کے ساتھ بدسلوکی کرنے والے آندھرائی وزیر کے فرزند کو نربھئے ایکٹ کے تحت گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا۔ اپنے فرزند کوبچانے کی کوشش کرنے والے وزیر آر کشور بابو کو وزارت سے برطرف کرنے کا چندرا بابو نائیڈو سے مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہائی سیکوریٹی زون بنجارہ ہلز کے علاقہ میں بھی خواتین محفوظ نہیںہیں۔ خانگی ٹیچر فاطمہ بیگم کے ساتھ کل آندھرائی وزیر کے فرزند سنیل اور اس کے ڈرائیور نے نشے کی حالت میں بدتمیزی کی ہے جس کی بنجارہ ہلز پولیس اسٹیشن میں شکایت بھی کی گئی ہے۔ تاہم سیاسی دباؤ کے باعث پولیس نے ڈرائیور کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے مگر وزیر کے فرزند کو بچانے کی کوشش کررہی ہے جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں اور فوری نربھئے ایکٹ کے تحت وزیر کے فرزند کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ شیخ عبداللہ سہیل نے وزیر کے فرزند سنیل کی جانب سے فیس بک پر کی گئی وضاحت کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایک مسلم خاتون کو آندھرائی وزیر یا ان کے فرزند سے کیسے سیاسی اختلافات ہوسکتے ہیں۔ اپنی غلطیوں پر پردہ ڈالنے کیلئے آندھرائی وزیر کے فرزند ایک مسلم خاتون پر سیاسی طور پر نقصان پہنچانے کی سازش کرنے کا الزام عائد کررہے ہیں جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر بنجارہ ہلز پولیس پر بھی سیاسی دباؤ کا شکار ہونے کی شکایتیں وصول ہورہی ہیں۔ وہ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس معاملے میں آندھرائی وزیر کے فرزند کے خلاف سخت کارروائی کرتے ہوئے تلنگانہ عوام کو یہ پیغام دیں کہ خواتین کے ساتھ بدسلوکی کرنے والوں کو ہرگز معاف نہیں کیا جائے گا اور ساتھ ہی چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو سے اپیل کرتے ہیں کہ اگر ان کے پاس خواتین کا احترام ہے تو وہ خواتین سے بدسلوکی کرنے والے فرزند کی تائید کرنے والے ریاستی وزیر کو اپنی کابینہ سے برطرف کردیں۔ اگر خاطیوں کے خلاف نربھئے ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرتے ہوئے گرفتار نہیں کیا گیا تو گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ کی جانب سے احتجاجی مہم کا آغاز کیا جائے گا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT