Friday , April 20 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاست سے تین راجیہ سبھا نشستوں کیلئے انتخابات کی تیاریاں

ریاست سے تین راجیہ سبھا نشستوں کیلئے انتخابات کی تیاریاں

اسمبلی میں عددی طاقت کی بنیاد پر تینوں نشستیں کیلئے ٹی آر ایس کی کامیابی تقریبا یقینی
حیدرآباد 16 جنوری (سیاست نیوز) راجیہ سبھا ارکان کے انتخاب کیلئے منعقد ہونے والے دو سالہ مدتی انتخابات کے ایک حصہ کے طور پر ریاست میں دو ماہ بعد تین راجیہ سبھا نشستوں کیلئے انتخابات منعقد ہوں گے۔ فی الوقت تلنگانہ سے راجیہ سبھا میں نمائندگی کرنے والے تین 3 ارکان کی میعاد جاریہ سال 2 اپریل کو ختم ہوگی ۔ میعاد کی تکمیل سے 15 یوم قبل انتخابی عمل کو پورا کرنا ضروری ہوگا۔ جس کے پیش نظر تین مخلوعہ نشستوں کیلئے انتخابات سے 40 یوم قبل الیکشن کمیشن سے اعلامیہ جاری کیا جائیگا۔ بتایا جاتا ہے کہ فی الوقت راجیہ سبھا میں ریاست کے تین ارکان میں مسٹر آر آنند بھاسکر (کانگریس)، سی ایم رمیش (تلگودیشم ) اور مسٹر پی گوردھن ریڈی (کانگریس ‘ جن کی چند ماہ قبل موت واقع ہوگئی تھی) شامل ہیں۔ تین کے منجملہ ایک نشست گوردھن کی موت کی وجہ سے مخلوعہ ہے اور دو نشستیں آنند بھاسکر ، سی ایم رمیش کی میعاد مکمل ہونے کی وجہ سے خالی ہونگی۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ آندھر اپردیش سے تعلق رکھنے والے سی ایم رمیش کو ریاست کی تقسیم کے موقع پر قرعہ اندازی پر انھیں تلنگانہ کیلئے الاٹ کیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ تین راجیہ سبھا نشستوں کیلئے انتخابات پر فی الوقت تلنگانہ اسمبلی میں پارٹیوں کے موقف کی روشنی میں تینوں ہی نشستوں پر ٹی آر ایس کی کامیابی کا امکان ہے۔ اس طرح انتخابات کے بعد راجیہ سبھا میں ٹی آر ایس کی طاقت میں اضافہ ہوگا اور اہم اپوزیشن کانگریس کی طاقت راجیہ سبھا میں کم ہوجائے گی۔ اس کے علاوہ تلنگانہ اسمبلی میں تلگودیشم کے صرف دو ارکان اسمبلی رہ جانے اور بی جے پی کے پانچ ارکان ہونے کی روشنی میں بی جے پی کو راجیہ سبھا کی کوئی نشست حاصل ہونے کی گنجائش نہیں ہے اور اسمبلی میں 7 ارکان رکھنے والی مجلس اپنی حلیف تلنگانہ راشٹرا سمیتی کی تائید کرتے ہوئے ٹی آر ایس امیدواروں کے حق میں اپنا ووٹ استعمال کرے گی۔ اس طرح تین راجیہ سبھا کی نشستیں بھی برسر اقتدار تلنگانہ راشٹرا سمیتی کو حاصل ہوں گی۔

TOPPOPULARRECENT