Tuesday , April 24 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاست میںشیروں کی تعداد میں اضافہ ممکن

ریاست میںشیروں کی تعداد میں اضافہ ممکن

ماحول سازگار ۔ گنتی کے قطعی اعداد و شمار اپریل تک متوقع
حیدرآباد 3 فبروری ( پی ٹی آئی ) ریاست تلنگانہ میںشیروں اور دوسرے جانوروں کی آبادی میں اضافہ کیلئے ماحول سازگار ہے تاہم حقیقی صورتحال کا پتہ چند ماہ بعد ہی چل سکے گا جب شیروں اور دوسرے جانوروں کی گنتی کے نتائج سامنے آئیں گے ۔ اس عمل کا حصہ رہنے والے ایک سینئر عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ ریاست میں شیروں اور ہاتھیوں کی گنتی کا کام 22 تا 29 جنوری منعقد کیا گیا ۔ تلنگانہ کے 2014 میں قیام کے بعد سے یہ پہلی مرتبہ گنتی کا کام ہوا ہے ۔ سینئر عہدیدار نے پی ٹی آئی کو بتایا کہ عمومی طور پر ریاست میں شیروں اور دوسرے جانوروں کی آبادی میں اضافہ کیلئے ماحول سازگار ہے ۔ تاہم ابھی تک جو کام ہوا ہے وہ صرف قیاس آرائیوں پر مبنی ہی ہے ۔ گنتی کے کام میں شامل افراد کیلئے مقررہ فارمٹس دئے گئے ہیں اور اس سارے عمل کو معیاری بنایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ گنتی کا کام کرچکے افراد کی جانب سے جو فارمس پر کئے جائیں گے انہیں وائلڈ لائیف انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا دہرہ دون کو روانہ کیا جائیگا جہاں ان کا تفصیلی جائیزہ لیا جائیگا ۔ امکان ہے کہ اس سارے عمل کے نتائج کا ماہ اپریل میں اعلان کیا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ تفصیلی جائز ہ اور گنتی کا تخمینہ کرنے کے کام کی مکمل ذمہ داری وائلڈ لائیف انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کی ہوگی ۔ متحدہ آندھرا پردیش میں جب 2013-14 میں شیروں کی گنتی ہوئی تھی اس وقت یہ قیاس کیا گیا تھا کہ ریاست میں شیروں کی جملہ تعداد 17 ہوسکتی ہے ۔ ملک بھر میںہر چار سال میں ایک مرتبہ شیروں کی گنتی کا کام کیا جاتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT