Sunday , September 23 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاست میں انتخابی مانسون سرگرم، قبل از وقت الیکشن کے اشارے

ریاست میں انتخابی مانسون سرگرم، قبل از وقت الیکشن کے اشارے

ضلع عادل آباد میں نئے سیاسی چہروں کی آمد شروع، جے پانڈو رنگ کی زبردست عوامی مقبولیت

نرمل۔/14جنوری،( جلیل ازہر کی خصوصی رپورٹ ) ریاست تلنگانہ میں انتخابی مانسون سرگرم دکھائی دے رہا ہے تاہم انتخابات مقررہ وقت سے قبل ہونے کے واضح اشارے مل رہے ہیں۔ ساتھ ہی اضلاع میں بڑے پیمانے پر سیاسی سرگرمیاں اور کچھ نئے چہروں کی آمد کو لے کر سیاسی حلقوں میں تبصرے شروع ہوچکے ہیں۔ قارئین کی دلچسپی کے لئے متحدہ ضلع عادل آباد جہاں دس اسمبلی حلقوں میں تما م پر بشمول رکن پارلیمنٹ کی نشست بھی ٹی آر ایس کے قبضہ میں ہے۔ وزیر اعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ نے پارٹی کی موجودہ صورتحال پر یہ اعلان کردیاہے کہ ٹکٹ عام انتخابات میں کامیابی کی ضمانت دینے والی شخصیت کو دیا جائے گا چاہے وہ پارٹی میںنووارد کیوں نہ ہو، ہرطرف یہ چرچے ہیں کہ آنے والے انتخابات میں کئی موجودہ اراکین کو ٹکٹ سے محروم کیا جائے گا، اس تناظر میں ہر اسمبلی حلقہ میں سیاسی دلچسپی رکھنے والے امیدوار کسی نہ کسی انداز سے عوام کی توجہ کا مرکز بن رہے ہیں۔ متحدہ ضلع عادل آباد کی اصل نشست جس پر جوگو رامنا کا قبضہ ہے اور وہ وزیر جنگلات ہیں جبکہ مستقر عادل آباد کی اسمبلی نشست کیلئے ایک بہت ہی اہم اور علیٰ عہدیدار جو محکمہ ٹرانسپورٹ حیدرآباد میں جائنٹ کمشنر کے عہدہ پر فائز ہیں جن کا سسرال عادل آباد ہے تاہم ان کی زیادہ سرویس مستقر عادل آباد میں ہونے کی وجہ وہ ضلع عادل آباد میں ایک منفرد شناخت عوام میں بنالی تاہم وقت کے بے رحم ہاتھوں نے جب ان کی پوسٹنگ ورنگل میں تھی کار کے ایک حادثہ میں ان کی شریک حیات ڈاکٹر سنگیتا پانڈو رنگ نائیک ہلاک ہوگئیں۔ بعد ازاں انہوں نے ضلع میں اپنی آنجہانی اہلیہ سنگیتا کے نام پر غریب غرباء ، یتیم، بے سہارا لوگوں کی مدد کرتے ہوئے اپنی ملازمت میں ترقی کی راہ پر گامزن رہے اور آج وہ محکمہ ٹرانسپورٹ میں جائنٹ کمشنر ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ انہوں نے فلاحی خدمات کو وسعت دیتے ہوئے گزشتہ سال ڈاکٹر سنگیتا پانڈو رنگ نائیک ٹرسٹ قائم کرتے ہوئے ایک میگا میڈیکل کیمپ منعقد کیا جس سے سینکڑوں غریب عوام نے استفادہ کیا۔ اس شخصیت کو مستقر عادل آباد اور آصف آباد جے پانڈو رنگ نائیک کے نام سے جانتے ہیں اور انہیں سیاسی میدان میں قدم رکھنے کی ترغیب دے رہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ انتہائی اہم عہدہ پر فائز مسٹر جے پانڈو رنگ بھی آئندہ عام انتخابات میں اسمبلی انتخابات لڑنے کا ذہن بناچکے ہیں۔ جبکہ دلچسپ پہلو یہ ہے کہ پانڈو رنگ کا تعلق ST طبقہ سے ہے اور ان دونوں اسمبلی حلقوں میں ان کی کافی مقبولیت ہے۔ انہوں نے اپنی ملازمت کے ساتھ ساتھ محکمہ کے علاوہ اپنی کارکردگی کے ذریعہ اچھی چھاپ چھوڑی ہے۔بتایا جاتا ہے کہ ریاست تلنگانہ کی اہم سیاسی جماعتیں کانگریس اور ٹی آر ایس کے اعلیٰ قائدین کے پاس ان کی شخصیت اور مقبولیت کی اطلاعات پہنچ چکی ہیں۔ دیکھنا یہ ہے کہ مسٹر پانڈو رنگ نائیک کس جماعت کی سمت رُخ کریں گے۔ اس لئے کہ آئندہ عام انتخابات میں اسمبلی ہو یا پارلیمنٹ ہو مسٹر پانڈو رنگ نائیک ایک طاقتور امیدوار بن کرسیاسی نقشہ پر ابھر سکتے ہیں جبکہ نمائندہ’سیاست‘ نے ان سے ربط قائم کرنے کی کوشش کی تاہم ربط نہ ہوسکا لیکن سیاسی حلقوں میں جے پانڈو رنگ نائیک تبصروں میں آگئے ہیں ۔ آئندہ حالات کیا ہوں گے یہ وقت ہی بتائے گا۔

TOPPOPULARRECENT