Sunday , January 21 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاست میں برقی معاہدوں میں بڑے پیمانے پر بدعنوانیاں

ریاست میں برقی معاہدوں میں بڑے پیمانے پر بدعنوانیاں

چیف منسٹر ’ مچھر پہلوان ‘ اور جگدیش ریڈی ’ چمچہ ‘ ۔ کانگریس لیڈر ریونت ریڈی کا بیان

حیدرآباد 9 جنوری (سیاست نیوز) کانگریس کے قائد و رکن اسمبلی ریونت ریڈی نے چیف منسٹر کے سی آر کو مچھر پہلوان اور وزیر برقی جگدیشور ریڈی کو چمچہ قرار دیتے ہوئے برقی معاہدوں میں بڑے پیمانے کی بدعنوانیاں ہونے کا الزام عائد کیا۔ برقی کی خریدی اور سربراہی پر وائیٹ پیپر جاری کرنے کا تلنگانہ حکومت سے مطالبہ کیا۔ آج گاندھی بھون میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ریونت ریڈی نے کہاکہ برقی خریدی کے معاملے میں ٹی آر ایس حکومت نے بڑے پیمانے پر بے قاعدگیاں کی ہیں جو کمپنیاں قرض کی دلدل میں پھنس کر مالی بحران کا شکار تھی اُن کمپنیوں سے حکومت نے مارکٹ سے زیادہ قیمت ادا کرتے ہوئے برقی خریدی ہے۔ پڑوسی ریاست آندھراپردیش میں سستے داموں پر برقی دستیاب ہونے کے باوجود تلنگانہ حکومت نے زیادہ قیمت پر برقی خریدی ہے۔ حکومت کے اس فیصلے سے سرکاری خزانے پر 957.45 کروڑ روپئے کا بوجھ عائد ہوا ہے۔ حکومت نے برقی خریدی کے معاملوں میں ایک تیر سے دو نشانے لگائے ہیں۔ اس فیصلے سے بند ہونے کے در پر پہونچ جانے والی خانگی کمپنیوں کو جہاں نئی زندگی ملی ہے وہیں برقی خریدی میں حکومت کو بڑا کمیشن بھی وصول ہوا ہے۔ سارے معاملے میں جو گول مال ہوا ہے، چیف منسٹر تلنگانہ اس کی وضاحت کریں۔ ریونت ریڈی نے ریاست میں فاضل برقی کی دستیابی میں ٹی آر ایس کا کوئی کارنامہ نہ ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے چیف منسٹر اور سرکاری مشنری پر جھوٹی بے بنیاد اور گمراہ کن تحریک چلانے کا الزام عائد کیا اور کہاکہ ٹی آر ایس کے ساڑھے تین سالہ دور حکومت میں ایک بھی نئی برقی یونٹ تیار نہیں ہوئی ہے۔ تلنگانہ حکومت نے جن دو برقی پراجکٹس کا سنگ بنیاد رکھا ہے ان کی ابھی تک کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔ کانگریس کے 10 سالہ دور حکومت میں جو برقی پراجکٹس شروع کئے گئے تھے اُن سے اب برقی دستیاب ہورہی ہے۔ اس کے علاوہ سابق وزیراعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے جو برقی پالیسی تیار کی تھی اُس سے ملک کے مختلف ریاستیں فاضل برقی پیدا کرنے والے ریاستوں میں تبدیل ہوچکی ہیں۔ ریونت ریڈی نے کہاکہ ڈسٹری بیوشن کی ذمہ داری آئی اے ایس عہدیداروں کو دینے کے بجائے چیف منسٹر کے سی آر نے اپنے دوستوں کو دی ہے۔ چیف منسٹر کی بات نہ سننے والے آئی اے ایس عہدیداروں سریش چندرا اور اروند کمار کو چیف منسٹر نے عہدوں سے ہٹادیا تھا۔ ریونت ریڈی نے دوبارہ صدر تلنگانہ پردیش کمیٹی نامزد ہونے پر اتم کمار ریڈی کو مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ 2019 ء میں کانگریس پارٹی کو برسر اقتدار لانے کے لئے کانگریس پارٹی کے تمام قائدین متحدہ طور پر کام کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT