Sunday , September 23 2018
Home / شہر کی خبریں / ریاست میں مزید 8 میڈیکل کالجس کی تجاویز

ریاست میں مزید 8 میڈیکل کالجس کی تجاویز

حیدرآباد ۔ 10 ۔ جنوری : ( ایجنسیز ) : میڈیکل تعلیم کے حصول میں فروغ کے پیش نظر ریاست کے مختلف علاقوں میں آئندہ تعلیمی سال سے مزید آٹھ میڈیکل کالجس کے آغاز کی تجاویز ہیں ۔ ان کالجس میں گیتم وشاکھا پٹنم ، گائتری وشاکھا پٹنم ، وسوا بھارتی کرنول ، وینکٹیشورا ایجوکیشنل انسٹی ٹیوٹ چتور اور دیگر چار حیدرآباد میں ہوں گے ۔ ریاستی حکومت نے ان کی

حیدرآباد ۔ 10 ۔ جنوری : ( ایجنسیز ) : میڈیکل تعلیم کے حصول میں فروغ کے پیش نظر ریاست کے مختلف علاقوں میں آئندہ تعلیمی سال سے مزید آٹھ میڈیکل کالجس کے آغاز کی تجاویز ہیں ۔ ان کالجس میں گیتم وشاکھا پٹنم ، گائتری وشاکھا پٹنم ، وسوا بھارتی کرنول ، وینکٹیشورا ایجوکیشنل انسٹی ٹیوٹ چتور اور دیگر چار حیدرآباد میں ہوں گے ۔ ریاستی حکومت نے ان کی جانب سے میڈیکل کالجس کے آغاز کے لیے درخواستیں موصول ہونے کے بعد انہیں ضروری سرٹیفیکٹس جاری کردئیے ہیں ۔ اس کا مطلب ریاستی سطح پر انہیں ہری جھنڈی دکھادی گئی ہے ۔ سرکاری تقرر کمیٹی کے اعلی ذرائع کے مطابق میڈیکل کونسل آف انڈیا ( ایم سی آئی ) کی اعلیٰ اختیاری کمیٹی توقع ہے کہ ماہ فروری کے آخری ہفتہ میں یا ماہ مارچ کے اوائل میں ان کالجس کا دورہ کرے گی ۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہے کہ ملک میں میڈیکل کالجس کے قیام کے لیے ایم سی آئی کی منظوری حرف آخر ہوتا ہے ۔ ایم سی آئی اس سلسلہ میں ایک رپورٹ اعلی باڈی کو پیش کرے گی ۔ ذرائع نے بتایا کہ گیتم ، وسوا بھارتی اور وینکٹیشورا انسٹی ٹیوٹ کو میڈیکل کالجس کا قیام کوئی مسئلہ نہیں ہے کیوں کہ ان کے پاس درکار انفراسٹرکچر سہولتیں موجود ہیں ۔ ذرائع نے بتایا کہ اگر ان آٹھ اداروں کو میڈیکل کالجس کے قیام کی اجازت دے دی جاتی ہے تب ریاست کے طلبہ کو تقریبا 1000 میڈیکل نشستیں دستیاب ہوجائیں گی ۔ اور ریاست میں میڈیکل نشستوں کی جملہ تعداد 7000 ہوجائے گی ۔ ریاست آندھرا پردیش کو آرٹیکل 371D کے خصوصی موقف کے تحت تمام میڈیکل نشستوں کو پر کرلیا جائے گا ۔ دریں اثناء خانگی میڈیکل کالجس کی جانب سے فیس میں اضافہ کی تجاویز کے ادخال کی آخری تاریخ 18 جنوری مقرر کی گئی ہے ۔ فیس میں اضافہ گذشتہ سال ہی کیا جانے والا تھا تاہم میڈیکل کالجس نے متفقہ طور پر اے ایف آر سی سے گذارش کی تھی اور ریاستی حکومت سے سال 2014 تک ملتوی کرنے کی خواہش کی تھی ۔ کالجس نے فیس میں 30 فیصد اضافہ کا مطالبہ کیا تھا ۔ موجودہ طور پر عام کنوینر کوٹہ کے تحت فیس اسٹرکچر 60,000 روپئے ہے جب کہ 2.40 لاکھ روپئے کنوینر کوٹہ خانگی کالجس کے لیے اور 5.50 لاکھ روپئے مینجمنٹ کوٹہ کے تحت ہے ۔ ریاستی حکومت نے این آر آئیز کے لیے 40 نشستوں میں سے 15 نشستیں مینجمنٹ کوٹہ کے تحت مہیا کرنے پر رضا مندی ظاہر کی ہے ۔ یہ خانگی کالجس کے لیے پیسوں کی بارش کے مترادف ہوگا ۔ خانگی کالجس پر 60 تا 80 لاکھ میں میڈیکل نشستوں کی فروخت کے الزامات بھی عائد کئے جاتے رہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT