Monday , July 23 2018
Home / ہندوستان / ریاست کرناٹک کا برقی بورڈ بحران کا شکار ، ملازمین پریشان

ریاست کرناٹک کا برقی بورڈ بحران کا شکار ، ملازمین پریشان

ترواننتاپورم۔9 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) شہری خدمات کا نقصان زدہ کیرالا اسٹیٹ الیکٹریسٹی بورڈ نے معاشی بحران پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ملازمین سے اس پر قابو پانے میں تعاون کرنے کی اپیل کی ہے۔ ملازمین کی یونینوں کے نمائندوں کے نام ایک مکتوب میں بورڈ کے صدرنشین اور منیجنگ ڈائرکٹر این ایس پلے نے کہا کہ بورڈ معاشی بحران کا سامنا کررہا ہے۔ اس کے نقصانات بڑھتے جارہے ہیں۔ 2016-17ء کی لازمی آڈٹ کے بموجب جملہ نقصانات 1.877 کروڑ روپئے ہوگئے ہیں۔ بورڈ کے صدرنشین نے کہا کہ وہ ایمپلائز ماسٹر پینشن اور گریچویٹی ٹرسٹ کے ڈپازٹ میں اپنا حصہ جمع کروانے سے قاصر ہیں۔ انہوں نے بورڈ کی حالت کو بہتر بنانے کے لیے تعاون کی اپیل کی ہے۔ پلے نے اپنے تازہ ترین مکتوب میں کہا کہ تمام نامکمل برقی پراجیکٹ کی تکمیل تعین مدت کے ساتھ اور اعظم ترین امکانات کے ساتھ اور روایتی برقی توانائی کے ذرائع کے ساتھ ہونی چاہئے۔ غیر روایتی برقی توانائی کے ذرائع استعمال کیے جانے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کے بقایہ جات وصول کرنے کے اقدامات کرنا ضروری ہے۔ کیرالا اسٹیٹ الیکٹریسٹی بورڈ کی معاشی صورتحال ایک ایسے وقت قرار ہوئی ہے جبکہ سی پی آئی ایم زیر قیادت بائیں محاذ کی حکومت ریاستی آر ٹی سی کو بچانے کے لیے ایک پیکیج دینے کے سلسلہ میں جدوجہد میں مصروف ہے۔ آر ٹی سی کی معاشی صورتحال 40 ہزار سابق ملازمین کے وظائف کی عظم ادائیگی کی وجہ سے خراب ہوگئی ہے۔ کل آر ٹی سی کے وظیفہ یاب ملازمین نے اپنی ہڑتال اس وقت واپس لے لی جب کہ ریاستی حکومت نے تیقن دیا کہ جلد از جلد ان کے بقایہ جات ادا کردیئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT