Saturday , December 16 2017
Home / ہندوستان / ریان اسکول کے مالکان کی گرفتاری روکنے سے عدالت کا انکار

ریان اسکول کے مالکان کی گرفتاری روکنے سے عدالت کا انکار

چنڈی گڑھ، 20 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ نے آج ریان اسکول گروپ کے مالکان کی گرفتاری پر روک لگانے سے انکار کر دیا۔ ریان پنٹو، گریس پنٹو اور فرانسس پنٹو کی گرفتاری پر ہائی کورٹ نے روک لگانے سے انکار کر تے ہوئے ہریانہ حکومت کو نوٹس جاری کیا ہے ۔عدالت نے حکومت سے طالب علم پردیومن کے قتل کے معاملہ میں جواب داخل کرنے کا حکم بھی دیا ہے ۔ پردیومن کے والد کی جانب سے حاضر ہوئے وکیل سشیل ٹیکریوال نے عدالت کے سامنے اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ جس بے رحمی کے ساتھ پردیومن کا قتل کیا گیا اس کے پیش نظر اسکول مالکان کو کسی قسم کی رعایت نہیں دی جانی چاہئے ۔ بعدازاں، انہوں نے بتایا کہ عدالت نے اسے ایک انتہائی سنگین معاملہ بتایا اور کہا کہ تمام فریقوں کے دلائل سننے کے بعد ہی کوئی فیصلہ کیا جاسکتا ہے ۔ اس معاملے پر اگلی سماعت پیر کو ہوگی۔ قابل ذکر ہے کہ 8 ستمبر کوگروگرام میں واقع ریان انٹرنیشنل اسکول کے دوسرے درجے کے طالب علم پردیومن کا اسکول کے ٹوائلٹ میں قتل کر دیا گیا تھا۔ اس معاملے میں پولیس نے اسکول کے بس ڈرائیور اشوک کمار کو گرفتار کیا ہے ۔ اس کے علاوہ اسکول کے دو دیگر افسران کو بھی گرفتار کیا گیا ہے ۔ اس وقت یہ تینوں عدالتی حراست میں ہیں۔ ہائی کورٹ کے جج اے بی چودھری نے کل ریان اسکول کے مالکان کی ضمانت سے متعلق درخواست کی سماعت کرنے سے یہ کہتے ہوئے انکار کردیا تھا کہ وہ پنٹو فیملی سے ذاتی طور پر واقفیت رکھتے ہیں۔

کاویری آبی تنازعہ: سپریم کورٹ میں فیصلہ محفوظ
نئی دہلی۔20ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے کاویری ندی کے پانی کی تقسیم سے متعلق کرناٹک اور ٹاملناڈو کے مابین جاری تنازعہ معاملہ میں آج اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا۔ چیف جسٹس دیپک مشرا، جج امیتابھ رائے اور جج اے ایم کھانولکر پر مشتمل خصوصی بنچ نے کرناٹک، ٹاملناڈو اور کیرالہ کی حکومتوں کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا۔ عدالت نے کاویری واٹر ڈسپیوٹ ٹریبونل (سی ڈبلیو ڈی ٹی) کے 2007کے فیصلہ کے خلاف دائر اپیلوں پر گزشتہ 11 جولائی سے حتمی سماعت شروع کی تھی۔ عدالت عظمی نے اس سے قبل ٹاملناڈو کو 2000کیوسک پانی دینے کا کرناٹک حکومت کو حکم دیا تھا۔ گزشتہ برس 9دسمبر کو خصوصی بنچ نے ٹریبونل کے خلاف ٹاملناڈو، کرناٹک اور کیرالہ حکومتوں کی جانب سے دائر اپیلوں پر سماعت کا اپنا آئینی اختیار برقرار رکھا تھا۔

TOPPOPULARRECENT