Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / ریزرویشن پالیسی میں تبدیلی پر ملک گیر احتجاج شروع کرنے مایاوتی کا انتباہ

ریزرویشن پالیسی میں تبدیلی پر ملک گیر احتجاج شروع کرنے مایاوتی کا انتباہ

موہن بھگوت کے نقطہ نظر سے مرکز کا اظہار لاتعلقی، لالو یادو اور نتیش کمار کا بھی شدید ردعمل
نئی دہلی۔/22ستمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) ریزرویشن پالیسی پر نظر ثانی کیلئے آر ایس ایس سربراہ کے مشورہ کے خلاف تنقید و تعریض کے پیش نظر مرکزی حکومت نے آج یہ وضاحت کی ہے کہ مروجہ کوٹہ سسٹم ( تحفظات کے طریقہ کار ) پر نظر ثانی کے حق میں نہیں ہے جبکہ موہن بھگوت کے مشورہ پر اپوزیشن جماعتوں نے برہمی کا اظہار کیا ہے ۔ بہوجن سماج پارٹی سربراہ اور دلت لیڈر مایاوتی اپنے ناقدین آر جے ڈی کے لالو پرسادیادو اور جنتا دل متحدہ کے نتیش کمار ( چیف منسٹر بہار ) کے ساتھ ہم آواز ہوکر این ڈی اے حکومت کو خبردار کیا کہ مروجہ ریزرویشن پالیسی میں ردوبدل کرنے کی کوش کی گئی تو ملک گیر احتجاج شروع کردیا جائے گا۔ اگرچیکہ بی جے پی نے کل ہی آر ایس ایس سربراہ کی اپیل سے لاتعلقی کا اظہار کیا تھا جبکہ کانگریس نے موہن بھگوت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ہندوستان میں تحفظات فراہمی دستوری حقوق کے عین مطابق ہے۔ مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے کل بی جے پی آفس میں ظاہر کردہ نقطہ نظر کا آج پھر ایک بار اعادہ کیا۔ بتایا کہ پارٹی اور حکومت اس موقف پر قائم ہے۔ مرکزی کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر روی پرساد نے کہا کہ ہماری حکومت دلتوں اور پسماندہ طبقات کیلئے مروجہ ریزرویشن پالیسی میں تبدیلی کے حق میں نہیں ہے اور ہمارا یہ ایقان ہے کہ تحفظات، معاشی، تعلیمی اور سماجی ترقی کیلئے ناگزیر ہیں۔

دریں اثناء سابق چیف منسٹر اتر پردیش مایاوتی جن کا ریاست ے دلتوں میں قابل لحاظ اثر و رسوخ پایا جاتا ہے کہا کہ حکومت کو بھاری قیمت چکانی پڑے گی۔ اگر وہ آر ایس ایس کی ایماء پر ریزرویشن سسٹم میں تبدیلی کی حماقت کرے گی۔ انہوں نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ اگر نریندر مودی، موہن بھگوت کے نقطعہ نظر کو عملی شکل دینے اور ریزرویشن کے انسانی چہرہ کو مسخ کرنے کی کوشش کریں گے تو بی ایس پی ملک گیر سطح پر احتجاجی تحریک شروع کردے گی جس کا خمیازہ حکومت کو بھگتنا پڑیگا۔دریں اثناء ریزرویشن پر نظر ثانی کیلئے آر ایس ایس سربراہ موہن بھگوت کے مشورہ سے بی جے پی کے اظہار لاتعلقی کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے نتیش کمار اور لالو پرساد یادو نے کہا کہ بہار کے انتخابات میں نقصانات کی تلافی کیلئے یہ بیان دیا گیا ہے کیونکہ حکمران جماعت میں یہ دم خم نہیں ہے کہ وہ آر ایس ایس کے خلاف جائے گی۔ ایک قومی نیوز چیانل کو دیئے گئے انٹرویو میں آر جے ڈی صدر لالو پرساد یادو نے کہا کہ بی جے پی دراصل آر ایس ایس کا مکھوٹا ( نقاب ) ہے اور وہ آر ایس ایس کے خلاف جانے کی جرأت نہیں کرسکتی۔جبکہ چیف منسٹر نتیش کمار نے کہا کہ بی جے پی دراصل آر ایس ایس کی سیاسی تنظیم ہے اور دونوں کے نظریات میں ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔ریزرویشن پالیسی پر آر ایس ایس سربراہ نے بی جے پی افکار کی ترجمانی کی ہے۔ واضح رہے کہ لالو پرساد یادو اور نتیش کمار دلتوں اور پسماند ہ طبقات کیلئے ریزرویشن کے کٹر حامی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT