Monday , June 18 2018
Home / Top Stories / ریلوے مسافر کرایوں میں 14.2، شرح بار برداری میں 6.5 فیصد اضافہ

ریلوے مسافر کرایوں میں 14.2، شرح بار برداری میں 6.5 فیصد اضافہ

نئی دہلی /20 جون (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے ماقبل بجٹ فیصلہ کے ذریعہ ریلوے کرایہ میں زبردست اضافہ کرتے ہوئے تمام زمروں میں 14.2 فیصد کا اضافہ کیا ہے، جب کہ شرح بار برداری میں 6.5 فیصد کا اضافہ کیا گیا، جس سے ریلوے کو سالانہ 8000 کروڑ روپئے کی آمدنی ہوگی۔ مالی بحران سے دوچار ریلوے کو سہارا دینے کے لئے حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے، جس کا 25 جون سے اطلا

نئی دہلی /20 جون (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے ماقبل بجٹ فیصلہ کے ذریعہ ریلوے کرایہ میں زبردست اضافہ کرتے ہوئے تمام زمروں میں 14.2 فیصد کا اضافہ کیا ہے، جب کہ شرح بار برداری میں 6.5 فیصد کا اضافہ کیا گیا، جس سے ریلوے کو سالانہ 8000 کروڑ روپئے کی آمدنی ہوگی۔ مالی بحران سے دوچار ریلوے کو سہارا دینے کے لئے حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے، جس کا 25 جون سے اطلاق عمل میں آئے گا۔ قبل ازیں نئی شرحوں پر استقدامی اثر کے ساتھ آج سے ہی عمل آوری کا فیصلہ کیا تھا، تاہم بعد ازاں 25 جون سے نئی شرحوں پر عمل آوری کا اعلان کیا گیا۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے ایک ہفتہ قبل ہی کہا تھا کہ ملک کو ’’سخت ترین فیصلوں‘‘ کے لئے تیار رہنا چاہئے۔ اس اضافہ کے باعث مسافروں کو دہلی اور کولکتہ کے درمیان اے سی ون کلاس کے سفر کے لئے دہلی۔ ہوڑہ راجدھانی کا کرایہ 3813 کی بجائے اب 4354 روپئے ادا کرنے ہوں گے۔ اسی ٹرین سے اے سی II کے ذریعہ سفر 2197 کی بجائے اب 2508 میں ہوگا۔ دہلی۔ ممبئی راجدھانی ایکسپریس کا سفر اب اے سی I میں 3567 کی بجائے 4073 روپئے میں ہوگا، اے سی II کا کرایہ 2064 کی بجائے 2357 روپئے ہوگا اور اے سی III میں 1416 کی بجائے 1617 روپئے کرایہ ہوگا۔ اسی طرح دہلی۔ چینائی راجدھانی کا سفر اب اے سی I میں 5430 کی بجائے 5673 روپئے میں ہوگا، اے سی II میں 2740 کی بجائے 3129 اور اے سی III میں 1850 کی بجائے 2119 روپئے ہوگا۔ آج کا یہ فیصلہ لوک سبھا انتخابات کے نتائج کے دن یعنی 16 مئی کو کئے گئے اعلان پر عمل آوری کی علامت ہے، جس دن کرایوں میں اضافہ کا اعلان کیا گیا تھا، لیکن فوری طورپر عمل آوری روک دی گئی تھی۔ اس تناظر میں نئی وزارت ریلوے نے اعلان کیا تھا کہ آج کے اضافہ کا فوری اطلاق عمل میں آئے گا، لیکن بعد ازاں 25 جون کی تاریخ طے کی گئی۔ کہا گیا ہے کہ نئی شرحوں پر عمل آوری کے لئے حکام کو وقت درکار ہے۔

اقتدار حاصل کرنے کے تقریباً ایک ماہ بعد این ڈی اے حکومت کے وزیر ریلوے سدانند گوڑا نے کہا کہ میں اس حکم پر عمل آوری کے لئے مجبور ہوں، جس کا فیصلہ ان کے پیش رو وزیر ریلوے نے کیا تھا۔ میں نے صرف نئی شرحوں میں اضافہ کو روکنے کے فیصلہ کو ہٹا لیا ہے۔ سابق میں ریلوے کرایوں میں اضافہ کا فیصلہ 16 مئی کو کیا گیا تھا۔ این ڈی اے حکومت کی جانب سے ریلوے بجٹ آئندہ ماہ کے پہلے ہفتہ میں پیش کیا جائے گا۔ ریلوے کے تمام درجوں میں 10 فیصد فلیٹ کا اعلان کیا گیا ہے، جس میں ایندھن کے مصارف کے تحت 4.2 فیصد کا اضافہ ہوگا۔ گوڑا نے ریل بھون میں صحافیوں کے گروپ کو بتایا کہ اضافی فنڈس جٹانے کے اختراعی طریقے زیر غور ہیں، جیسے راست بیرونی سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) کی اجازت دینا یا پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ (پی پی پی) کی راہ اختیار کرنا اور بانڈس جاری کرنا۔ گزشتہ کئی سال سے توجہ ہٹ جانے کے بعد ریلوے کو اب نئے حرکیاتی پہلو کی ضرورت ہے۔ ریلوے بورڈ عہدہ داروں کے ساتھ حالیہ میٹنگ میں گوڑا نے اپنے پیش رو کی بعض تجاویز سے اتفاق کیا تھا۔
سگریٹ کی قیمتوں میں اضافہ کا امکان
نئی دہلی /20 جون (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی حکومت اپنے بجٹ 2014-15ء میں سگریٹ کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ کرے گی۔ وزارت صحت نے تمام اقسام کے سگریٹوں پر فی سگریٹ 3.5 روپئے اضافہ کی سفارش کی ہے۔ قیمتوں میں اضافہ کا مقصد اس کے استعمال کرنے والے افراد کی تعداد گھٹانا ہے۔

TOPPOPULARRECENT