Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / ریونت ریڈی پر تلنگانہ تلگودیشم کی خفیہ سودے بازی کا الزام

ریونت ریڈی پر تلنگانہ تلگودیشم کی خفیہ سودے بازی کا الزام

راہول گاندھی سے ملاقات اور کانگریس میں شمولیت کی تیاریاں ، ایم نرسمہلو کا دعوی
حیدرآباد /20 اکٹوبر ( سیاست نیوز ) تلگودیشم پارٹی کے سینئیر قائد ایم نرسمہلو نے ریونت ریڈی پر دہلی میں راہول گاندھی سے خفیہ ملاقات کرتے ہوئے تلنگانہ تلگودیشم کو ہول سیل میں کانگریس کو فروخت کرنے کا سودا کرنے کا الزام عائد کیا اور’’ ووٹ برائے نوٹ ‘‘ اسکام کیلئے تنہا ریونت ریڈی کو ذمہ دار قرار دیا ۔ انہوں نے این ٹی آر بھون میں آج منعقدہ پولیٹ بیورو اور سنٹرل کمیٹی ارکان کے اجلاس سے واک آوٹ کرنے کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر تلگودیشم کے قائد ارویند کمار گوڑ بھی موجود تھے ۔ ایم نرسمہلو نے کہا کہ جب سے ریونت ریڈی پارٹی میں شامل ہوئے ہیں تلگودیشم کو نقصان پہونچانے کے ’’سنگل پوائنٹ ‘‘ ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں ۔ انہیں تلنگانہ تلگودیشم پارٹی کا ورکنگ پریسیڈنٹ بنانے کے بعد پارٹی کو ترقی کے بجائے زوال ہوا ہے ۔ تلنگانہ میں تلگودیشم کو پہلے 23 فیصد عوامی تائید تھی جو ، اب گھٹ کر 10 فیصد تک پہونچ گئی ہے ۔ وہ شخصی فائدہ اور شہرت چاہتے ہیں اور چیف منسٹر بننے کی خواہش میں پارٹی کو برباد کر رہے ہیں ۔ ان کے نامناسب روئیے کے باعث 15 ارکان اسمبلی تلگودیشم چھوڑ کر ٹی آر ایس میں شامل ہوگئے ہیں ۔ نرسمہلو نے کہا کہ انہوں نے اجلاس میں صاف طور پر راہول گاندھی سے ملاقات پر ریونت ریڈی سے وضاحت طلب کی کہ آیا ملاقات کرنے سے قبل پارٹی سربراہ چندرا بابو نائیڈو سے اجازت طلب کی تھی یا نہیں ۔ کانگریس سے سیاسی اتحاد کیلئے مذاکرات کرنے کا انہیں کس نے اختیار دیا ۔ آندھراپردیش کے تلگودیشم قائدین کو تنقید کا نشانہ بنانے کی بھی وجہ طلب کی تھی لیکن ریونت ریڈی نے ہمیں کچھ نہیں بتایا ۔ صرف اتنا کہا کہ وہ پارٹی صدر چندرا بابو نائیڈو سے وضاحت کریں گے ۔ ہم نے انہیں ایک اور موقع دیتے ہوئے جو کچھ ہوا اس کو بھول کر ابھی میڈیا سے رجوع ہوکر کانگریس میں شامل ہونے کی تردید کرتے ہوئے تلگودیشم میں برقرار رہنے کی وضاحت کرنے کا بھی مشورہ دیا تھا ۔ جس کو قبول کرنے سے ریونت ریڈی نے صاف انکار کردیا ۔ اس سے اندازہ ہوگیا ہے کہ وہ کانگریس میں شامل ہونے کا من بناچکے ہیں ۔ کانگریس ہائی کمان کے پاس ہمارے سروں کی گنتی کراتے ہوئے بہت بڑا سودا کرچکے ہیں ۔ ریونت ریڈی غلط فہمی کا شکار ہوچکے ہیں ۔ ان کی تائید میں کوئی نہیں ہے اور نہ ہی ان کے ساتھ کوئی کانگریس میں شامل ہوں گے ۔ وہ اپنی حواریوں کو چند پیسے دیتے ہوئے زندہ آباد کے نعرے لگاتے ہوئے شور شرابہ کرانے کے عادی ہے اور خود اپنے ذاتی مفادات کیلئے پارٹی کو نقصان پہونچا رہے ہیں ۔ ایم نرسملو نے کہاکہ نوٹ برائے ووٹ اسکام کیلئے بھی ریونت ریڈی تنہا ذمہ دار ہے ۔ غیر ضروری پارٹی صدر این چندرا بابو نائیڈو کو اس معاملے میں بدنام کر دیا گیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT