Tuesday , November 21 2017
Home / جرائم و حادثات / ر68 روزہ برت کے بعد متوفی لڑکی کے والدین کیخلاف مقدمہ درج

ر68 روزہ برت کے بعد متوفی لڑکی کے والدین کیخلاف مقدمہ درج

حیدرآباد۔9 اکتوبر (پی ٹی آئی؍ سیاست نیوز) پولیس نے کہا ہے کہ مذہبی رسم کے طور پر 68 روزہ ’’اُپواس‘‘ رکھنے کے بعد فوت ہونے والی 13 سالہ لڑکی کے ماں باپ اور دیگر ارکان خاندان کے خلاف لاپرواہی کے سبب موت (جو قتل کے مترادف نہیں) کے الزام کے تحت ایک مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ نارتھ زون پولیس کے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر پی وائی گری نے پی ٹی آئی سے کہا کہ ’’حقوق اطفال کی ایک مقامی تنظیم بالالد پکولا سنگھم کی طرف سے دائر کردہ شکایت کی بنیاد پر مارکٹ پولیس اسٹیشن نے ہندوستانی تعزیری خاتون کی دفعہ 304(II) اور کمسن بچوں سے انصاف کے قانون کی دفعہ 75 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ انسپکٹر متیا نے کہا کہ شکایت گذار کی جانب سے لڑکی کے ماں باپ اور دیگر ارکان خاندان کو موردالزام ٹھہرائے جانے کے پیش نظر ان کے خلاف ایک مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ (شکایت) محض ایک الزام ہے جس کی صداقت کا پتہ چلایا جارہا ہے۔ تحقیقات کی بنیاد پر تفصیلات برآمد ہوں گے۔ بعدازاں مناسب کارروائی کی جائے گی۔ اس لڑکی کے ماں باپ سکندرآباد کے پاٹ بازار علاقہ میں رہتے ہیں جن سے پہلے ہی پوچھ گچھ کی جاچکی ہے۔ قبل ازیں بچوں کے حقوق کی تنظیم نے الزام عائد کیا تھا کہ جین طبقہ سے تعلق رکھنے والے ایک جوہری کی تجارت میں خسارہ ہورہا تھا چنانچہ اس نے جین منیوں کے مشورہ پر اپنی بیٹی کو 68 روز کا برت رکھوایا تھا جو یکم اکتوبر کو مکمل ہوا لیکن بعد میں اس کی حالت بگڑ گئی اور دو دن بعد 3 اکتوبر کو وہ فوت ہوگئی۔

TOPPOPULARRECENT