Sunday , January 21 2018
Home / ہندوستان / زبردستی کھانا کھلانے کے تنازعہ کا گودھرا سے تقابل

زبردستی کھانا کھلانے کے تنازعہ کا گودھرا سے تقابل

ممبئی 24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا کے رکن پارلیمنٹ نے مہاراشٹرا سدن کے ایک مسلم رکن عملہ کو روزہ دار ہونے کے باوجود زبردستی کھلانے کے واقعہ کو گجرات میں گودھرا ٹرین آتشزنی کے واقعہ کے مماثل قرار دیا۔ ایک روزنامہ کو انٹرویو دیتے ہوئے رکن پارلیمنٹ آنند راؤ اڈسل نے کہاکہ یہ گودھرا کے مماثل ہے۔ ہر ایک گودھرا کو بھول چکا ہے اور صر

ممبئی 24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا کے رکن پارلیمنٹ نے مہاراشٹرا سدن کے ایک مسلم رکن عملہ کو روزہ دار ہونے کے باوجود زبردستی کھلانے کے واقعہ کو گجرات میں گودھرا ٹرین آتشزنی کے واقعہ کے مماثل قرار دیا۔ ایک روزنامہ کو انٹرویو دیتے ہوئے رکن پارلیمنٹ آنند راؤ اڈسل نے کہاکہ یہ گودھرا کے مماثل ہے۔ ہر ایک گودھرا کو بھول چکا ہے اور صرف اُسی وقت یہ واقعہ یاد آتا ہے جب اِس کے بعد کوئی اور واقعہ پیش آئے۔ آج بھی ہر شخص اِس واقعہ کے بارے میں بات چیت کررہا ہے لیکن کسی کو بھی حقیقت جاننے کی پرواہ نہیں ہے۔ گودھرا ٹرین آتشزنی واقعہ میں 59 افراد زندہ جل گئے تھے اور اُس کے بعد ہی 2002 ء کے گجرات فسادات پیش آئے تھے۔ زبردستی کھلانے کا واقعہ ایک بڑا تنازعہ بن گیا ہے۔ اورنگ آباد میں صدر شیوسینا اودھو ٹھاکرے نے کہاکہ ممکن ہے کہ ہمارا ایجنڈہ ہندوتوا کا ہو لیکن ہم کسی بھی برادری کے مذہبی جذبات سے کھلواڑ نہیں کرتے۔

TOPPOPULARRECENT