Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / زرعی قرض کی معافی کیلئے آر بی آئی سے ہنوز عدم منظوری

زرعی قرض کی معافی کیلئے آر بی آئی سے ہنوز عدم منظوری

تلنگانہ اور آندھرا پردیش کی حکومتوں کے قیام کا ایک ماہ سے زائد عرصہ کے باوجود وعدہ وفا نہیں ہوا

تلنگانہ اور آندھرا پردیش کی حکومتوں کے قیام کا ایک ماہ سے زائد عرصہ کے باوجود وعدہ وفا نہیں ہوا
حیدرآباد۔/15 جولائی، ( سیاست نیوز) تلنگانہ اور آندھرا پردیش کی حکومتوں نے کسانوں سے زرعی قرض معاف کرنے کا وعدہ تو کرلیا لیکن حکومت کے ایک ماہ مکمل ہونے کے باوجود ابھی تک اس سلسلہ میں ریزروبینک سے دونوں حکومتوں کو فیصلہ پر عمل آوری کیلئے منظوری حاصل نہ ہوسکی۔ ریزروبینک آف انڈیا کی جانب سے زرعی قرضوں کی معافی پر اعتراض کے باوجود دونوں حکومتیں ابھی بھی عوام سے وعدہ کررہی ہیں کہ انتخابی وعدوں پر بہرصورت عمل کیا جائے گا۔ تلنگانہ کے وزیر پنچایت راج و انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ کسانوں کے قرضوں کی معافی کے مسئلہ پر ان کی حکومت اپنے عہد کی پابند ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر ریزرو بینک آف انڈیا اور بینکوں سے بات چیت جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ بیمہ کمپنیوں کے اشتراک سے تلنگانہ میں غربت کے خاتمہ کے اقدامات کئے جائیں گے۔ راما راؤ نے کہا کہ اگسٹ کے آخری ہفتہ یا پھر سپٹمبر کے پہلے ہفتہ میں تلنگانہ اسمبلی کا بجٹ اجلاس منعقد ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت مواضعات کی سطح تک ہمہ جہتی ترقی کیلئے جامع منصوبہ تیار کررہی ہے۔ راما راؤ نے کہا کہ ہمارا گاؤں ، ہماری حکمت عملی نظریہ کے تحت مواضعات کی سطح پر ترقی کا منصوبہ تیار کیا جائے گا اور اسی نظریہ سے ریاستی سطح کی ترقیاتی حکمت عملی طئے کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ مواضعات سے ریاستی سطح تک ایکشن پلان کی تیاری کی بنیاد پر بجٹ کو قطعیت دی جائے گی۔ تمام محکمہ جات کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ بجٹ کو قطعیت دینے سے قبل اپنی ضرورت کے مطابق ایکشن پلان حکومت کو پیش کریں۔ کے ٹی آر نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت حیدرآباد کو ملک کا دوسرا معاشی دارالحکومت کے طور پر تیار کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد میں انفارمیشن ٹکنالوجی اور صنعتی ترقی کیلئے حکومت جامع منصوبہ تیار کرے گی۔اسی دوران ریزروبینک آف انڈیا کے ڈپٹی گورنر آر گاندھی نے واضح کیا کہ آر بی آئی کی جانب سے زرعی قرضوں کی معافی کے مسئلہ پر تلنگانہ اور آندھرا پردیش حکومتوں کو ابھی منظوری نہیں دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آر بی آئی نے دونوں حکومتوں سے قرض اور معافی کے سلسلہ میں تفصیلات طلب کی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ آفات سماوی اور دیگر تباہی کی صورت میں زرعی قرضوں کو ری شیڈول کرنے کیلئے آر بی آئی کے پاس رہنمایانہ خطوط موجود ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ تلنگانہ حکومت 16جولائی کو منعقد ہونے والے کابینی اجلاس میں آر بی آئی کو روانہ کی جانے والی تفصیلات طئے کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT