Monday , February 19 2018
Home / دنیا / زلزلہ : کٹر دشمن ایران کیلئے اسرائیل کی امدادی پیشکش

زلزلہ : کٹر دشمن ایران کیلئے اسرائیل کی امدادی پیشکش

یروشلم۔15 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو نے ایران میں آئے جان لیوا زلزلہ سے متاثرین کے لیے امداد کی پیشکش کی ہے۔ حالانکہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے کٹر دشمن ہیں لیکن اس کے باوجود انسانیت کا جذبہ غالب رہا اور اسی کو بنیاد بناکر اسرائیل نے یہ پیشکش کی ہے۔ جیوش فیڈریشن آف نارتھ امریکہ کے ساتھ ہوئی ایک ویڈیو کانفرنس کے دوران یہ پیشکش کی گئی۔ یہاں اس بات کا تذکرہ دلچسپ ہوگا کہ ایران یہودی ملک اسرائیل کو تسلیم نہیں کرتا جبکہ اسرائیلی میڈیا نے یہ اطلاع دی ہے کہ انٹرنیشنل کمیٹی برائے ریڈکراس کے ذریعہ ایران نے انتہائی مؤدبانہ انداز میں اسرائیل کی پیشکش کو نامنظور کردیا تاہم اس انکار نے زلزلہ سے متاثرہ ہزاروں افراد کو ناراض کردیا ہے کیوں کہ آج وہ بے گھر ہونے کی وجہ سے کھلے آسمان کے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں اور 1979ء میں اسلامی انقلاب کے بعد امدادی / خیراتی فائونڈیشنس قائم کئے گئے تھے۔ وہ اس آفت ناگہانی کے موقع پر بروقت امداد پہنچانے سے قاصر ہیں۔ نتن یاہو نے لاس اینجلس میں منعقدہ ویڈیو کافنرنس میں انتہائی دکھ بھرے لہجہ میں کہا کہ مرد و خواتین کے علاوہ بچوں کو بھی ملبہ میں دبے ہونے کے مناظر دیکھنے کے بعد وہ بے حد رنجیدہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ یہ بات ایک بار نہیں، کئی بار دہراچکے ہیں کہ ان کی دشمنی ایرانی عوام سے نہیں بلکہ ظالم ایرانی حکومت سے ہے جو ہمیشہ اسرائیل کو نیست و نابود کرنے کی دھمکی دیتی رہتی ہے تاہم ہماری انسانیت ان کی نفرت سے بالاتر ہے۔ یاد رہے کہ 12 نومبر کو آئے زلزلہ میں زائد از 400 افراد ہلاک اور ہزاروں افراد بے گھر ہوگئے۔ زلزلہ ایران۔ عراق سرحد پر آیا تھا جس نے عوام کو دہشت زدہ کردیا تھا۔ اسرائیل ایران اور اس کے قریبی حلیف یعنی لبنانی شعبہ عسکریت پسند گروپ حزب اللہ کو اپنا دشمن نمبر ایک تصور کرتا ہے جبکہ ایران فلسطینی عسکریت پسند گروپ حماس اور اسلامک جہاد کا زبردست حامی ہے۔

TOPPOPULARRECENT